نماز پڑھنے والوں کے لیے خوشخبریاں.....

عبدالحسیب نے 'نماز' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏4 اپریل 2017

  1. عبدالحسیب

    عبدالحسیب رکن

    مراسلے:
    1,218
    نماز پڑھنے والوں کے لیے خوشخبریاں.....

    لا إلہ إلا اللہ اور محمد رسول اللہ کی گواہی کے بعد جو سب سے اہم فریضہ ایک مسلمان پر عائد ہوتا ہے وہ پانچ وقت کی نمازیں ہیں ,وہ نماز کہ جو کفروشرک اور مو من بندہ کے درمیان وجہ امتیاز ھے,اسلام اورکفرکے درمیان حد فاصل ہے ,
    جس کے بارے میں قیامت کے دن سب سے پہلے باز پرس ہوگی ,
    جو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی آنکھوں کی ٹھنڈک ہے اور جو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی کے آخری لمحات کی وصیت ہے
    مزید برآں یہ اس کی پابندی اور نگہداشت کرنے والوں (نمازیوں) کے لئے اپنے دامن میں بہت سی فضیلتیں ,خوشخبریاں اوربشارتیں رکھتی ہے ,جو ایک مسلمان کو دعوت عمل دے رہی ہیں –
    لہذا نماز کے فضائل کے متعلق کچہ عظیم بشارتیں –قرآن اور صحیح احادیث کی زبانی –
    آپ کی خدمت میں پیش کی جارہی ہیں ,ان شاءاللہ یہ آپ کے اندر نماز کی پابندی کرنے کا شوق وجذبہ پیدا کریں گی .
    نماز تمام اعمال میں افضل ترین ہے:
    عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت کیا کہ کون سا عمل سب سے افضل ہے ؟آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ((الصلاۃ لوقتھا )) "نماز کو اس کے وقت پر ادا کرنا
    (بخاری ومسلم)

    نمازبندہ اور اس کے رب کے ما بین رابطہ اورتعلق ہے :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:)) إذا صلی أحدکم یناجی ربّہ)) "جب تم میں سے کوئی شخص نماز پڑھتا ہے تو اپنے رب سے سرگوشی کررہاہوتا ہے"
    (بخاری)
    نماز آگ سے امان اور بچاؤ ہے :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہے :
    وه شخص نار (جهنم) ميں ہرگز نہیں داخل ہوگا جو سورج نکلنے سے پہلے اور سورج غروب ہونے سے پہلے کی نماز پڑھتا رہا –یعنی فجر اور عصر کی نماز"
    (مسلم)
    نماز بے حیائی اور منکر (ناشائستہ ) باتوں سے روکتی ہے :
    فرمان الہی ہے :
    {اتْلُ مَا أُوحِيَ إِلَيْكَ مِنَ الْكِتَابِ وَأَقِمِ الصَّلَاةَ إِنَّ الصَّلَاةَ تَنْهَى عَنِ الْفَحْشَاء وَالْمُنكَرِ } "
    جو كتاب آپ کی طرف وحی کی گئی ہے اسے پڑھئے اورنماز قائم کریں ,یقیناً نماز بے حیائی اوربرائی سے روکتی ہے –
    (سورۃ العنکبوت :45)

    نمازی کیلئے فرشتے رحمت ومغفرت کی دعا کرتے ہیں :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :
    جب تم ميں سے کوئی شخص اپنی نمازگاہ میں ہوتا ہے جہاں اس نے نماز پڑھی ہے ,فرشتے اس کے لئے دعائیں کرتے رہتے ہیں جب تک کہ وہ حدث نہ کرے (یعنی اس کا وضوٹوٹ نہ جائے ) ,وہ کہتے ہیں :اے اللہ! تو اسے بخش دے ,اے اللہ !تو اس پررحم فرما"
    (متفق علیہ)
    اللہ عزوجل کے حفظ وامان کی بشارت :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :
    جس نے صبح کی نماز پڑھی وہ اللہ تعالى کے ذمہ داری وپناہ میں ہے ,لہذا اے ابن آدم !دیکھ کہیں اللہ تعالى تجہ سے اپنے ذمہ میں سے کسی چیز کا مطالبہ نہ کرے "
    (مسلم )

    نمازاس کی پابندی کرنے والے کیلئے قیامت کے دن نجات کا باعث ہوگا :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے :
    "جس نے نما ز کی حفاظت اورنگہداشت کی اس کے لئے نماز قیامت کے دن نور,دلیل اورنجات کا باعث ہوگی ,اور جس نے اسکی پابندی نہیں کی اس کیلئے نہ کوئی نور ہوگا ,نہ دلیل ہوگی اورنہ ہی کوئی نجات کا ذریعہ ہوگا ,اور وہ قیامت کے دن قارون ,فرعون ,ہامان اور ابی بن خلف کے ساتہ ہوگا "
    (مسند احمد ,دارمی )

    نماز نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے ہمراہ جنت میں داخل ہونے کے عظیم ترین اسباب میں سے ہے :
    ربیعہ بن کعب اسلمی رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتہ رات گزارتا تھا,اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے وضو کا پانی لاتا, اور آپ کی حاجت کو سر انجام دیا کرتا تھا تو آپ نے مجہ سے فرمایا :"مانگو" تو میں نے کہا ":میں جنت میں آپ کی رفاقت کا سوال کرتا ہوں ,آپ نے فرمایا :"کیا اس کے علاوہ اور کوئی مانگ ہے ؟"میں نے کہا :صرف وہی ,آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :
    "كثرت سجود (يعني زياده سے زیادہ نفلى نمازوں ) کے ذریعہ اپنے نفس پر میری مدد کرو"
    (مسلم )

    اس کے گزشتہ گناہ معاف کردئے جاتے ہیں :
    آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا
    جوبھی مسلمان آدمی کسی فرض نماز کے وقت کو پاتا ہے ,پھر اس کے لئے خوب اچھی طرح وضو کرتا ہے ,اس کے اندر خشوع وخضوع کا اہتمام کرتا اور اسکے رکوع کو مکمل کرتا ہے تو یہ نماز اس کے گزشتہ گناہوں کیلئے کفارہ بن جائے گی , جب تک کہ وہ کسی کبیرہ گنا ہ کا ارتکاب نہ کرے ,اوریہ زندگی بھر ہوتا رہتا ہے "
    (مسلم )

    حاصل کلام
    یہ تو چند احادیث آپ سب کے ساتھ شئیر کی بات سمجھانے کےلیے کافی ہے نماز ایک مسلمان کے لیے ایسے ضروری ہے جیسے سانس
    آج تو غیر مسلم بھی نماز کی افادیت کو مان گئے ہیں 5 وقت اللہ کے آگے سجدہ کرنے سے جم بہت سی بیماریوں سے محفوظ رہتا ہے
    جو نبی 1400 سال پہلے بتاگیا ہم ماننے کو تیار نہیں.
    واللہ ہم سب بہت کوتاہی کرتے ہیں اس معاملہ میں دنیا کا معاملہ ہو یا سکول/کالج کا امتحان ہم اپنی نیندین قربان کردیتے ہیں مگر جب فجر کا وقت ہوتا ہے ہم 10 منٹ کے لیے جاگنے تو تیار نہیں .
    اگر کیا وجہ ہے نماز پڑھنے کو دل نہیں کرتا میرا ؟
    حالانکہ ہم کو اللہ اور اس کے رسول سے اپنی جانوں سے زیادہ محبت ہے
    وہ نبی جب نماز کے لیے بولاتا ہے ہم کو بار بار ہم ماننے کے لیے تیار نہیں !!!
    لیکن محبت ہے ہم کو ......کیا ہماری یہ محبت صرف دعووں تک محدود ہے ؟
    ہمیں اس بات پر سوچنا چاہئے اور آج ہی سے اللہ سے توبہ کر کے پانچ وقت نمازوں کو پاپندی سے ادا کرنا شروع کردیئے.
    یقنن اس کی کامیابی ہے !
    اللہ کریم ہم سب کو نمازوں کا پاپند بنادئے....آمین یارب

اس صفحے کی تشہیر