عالمی خبر شام کی لمبی تاريک رات

fawad نے 'خبروں کی دنیا' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏20 مارچ 2018

  1. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    اسد حکومت کے ظالمانہ حربوں کا نشانہ بننے والی ان معصوم جانوں کی خاموش چيخيں عرش ہلا رہی ہيں





    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  2. nabeel

    nabeel رکن

    مراسلے:
    56
    مسلمان ایک دوسرے کے دشمن بنے ہوۓ ہے ہمیں ایک ہونا ہو گا تبھی ہم دشمن کا مقابلہ کر پا ۓ گے ا للہ تمام مسلمانوں کی حفاظت فرماۓ آمین
  3. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    شامی شہر دوما پر کیمیائی حملہ

    [​IMG]

    ہم 7 اپریل کو شام کے شہر دوما میں ایک اور کیمیائی حملے سے متعلق پریشان کن اطلاعات کا بغور جائزہ لے رہے ہیں۔ اس مرتبہ ایسے حملے میں ایک ہسپتال کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ متعدد رابطوں اور وہاں موجود طبی عملے کے افراد سے ملنے والی اطلاعات سے نشاندہی ہوتی ہے کہ اس حملے میں ممکنہ طور پر بڑا جانی نقصان ہوا اور پناہ گاہوں میں موجود خاندان بھی اس کا نشانہ بنے۔ اگر ایسی اطلاعات درست ہیں تو یہ ایک ہولناک صورتحال ہے جو عالمی برادری کی جانب سے فوری ردعمل کا تقاضا کرتی ہے۔

    امریکہ شام سمیت ہر جگہ کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے والوں کے احتساب کے لیے ہرممکن کوششیں بروئے کار لا رہا ہے۔ شامی حکومت کی جانب سے اپنے ہی لوگوں کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں سے حملوں کے واقعات شبے سے بالاتر ہیں اور درحقیقت قریباً ایک سال قبل 4 اپریل 2017 کو بھی اسد کی افواج نے خان شیخون میں سرن گیس سے حملہ کیا تھا جس میں قریباً 100 شامی ہلاک ہوئے۔

    شامی حکومت اور اس کی پشت پناہی کرنے والوں کا احتساب اور ایسے مزید حملوں کی فوری روک تھام ہونی چاہیے۔ روس پر بھی ایسے وحشیانہ حملوں کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے جو اسد حکومت کی مسلسل حمایت کر رہا ہے۔ ان حملوں میں بے شمار شہریوں کو نشانہ بنایا گیا اور کیمیائی ہتھیاروں سے شام کے انتہائی کمزور لوگوں کا گلا گھونٹ دیا گیا۔ روس نے اپنے اتحادی شام کو تحفظ دے کر کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال روکنے کے سلسلے میں ضمانتی کے طور پر اقوام متحدہ سے کیے گئے وعدوں کی خلاف ورزی کی ہے۔ روس کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق کنونشن اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2118 کے حوالے سے دھوکہ دہی کا مرتکب ہوا ہے۔ روس کی جانب سے اسد حکومت کے تحفظ اور شام میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال روکنے میں ناکامی سے مجموعی بحران کے حل اور کیمیائی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ سے متعلق ترجیحات بارے اس کے عہد پر سوالیہ نشان کھڑا ہو گیا ہے۔

    امریکہ روس سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ شامی حکومت کی قطعی حمایت فوری بند کرے اور مزید وحشیانہ کیمیائی حملوں کی روک تھام کے لیے عالمی برادری سے مل کر کام کرے۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    USUrduDigitalOutreach - Home | Facebook

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  4. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    "ہم نے شامی حکومت کوانسانیت کےخلاف اس کےمظالم پر ذمہ دارٹھہرا کر مستقبل میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال روکنےکيلۓ کارروائی کی "، سفير نيکی ہيلی


    https://translations.state.gov/2018...گامی/?utm_medium=email&utm_source=govdelivery

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    USUrduDigitalOutreach - Home | Facebook

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  5. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    " اس مرتبہ ہمارے اتحادیوں اور ہم نے کڑی کارروائی کی ہے۔ ہم نے مشترکہ طور پر اسد اور اس کے قاتل معاونین کو ایک واضح پیغام دیا ہے کہ انہیں کیمیائی ہتھیاروں سے مزید حملے نہیں کرنے چاہئیں جن کے لیے وہ جوابدہ ہوں گے"،

    امریکی وزیردفاع جیمز

    شام کے معاملے پر امریکی وزیردفاع جیمز این میٹس کا بیان


    جیسا کہ دنیا جانتی ہے شامی عوام نے اسد حکومت کی جانب سے ظلم و زیادتی کے طویل عرصہ میں بری طرح مصائب اٹھائے ہیں۔

    سات اپریل کو اسد حکومت نے مہذب لوگوں کے اصولوں کی ایک مرتبہ پھر خلاف ورزی کا فیصلہ کیا اور خواتین، بچوں اور دیگر معصوم لوگوں کو کیمیائی ہتھیاروں سے قتل کرنے کے لیے عالمی قانون سے سنگدلانہ بے اعتنائی برتی۔ ہم اور ہمارے اتحادی ایسے مظالم کو ناقابل معافی سمجھتے ہیں۔

    ہمارے کمانڈرانچیف اور صدر کےپاس سمندرپار اہم امریکی قومی مفادات کے دفاع کے لیے آئین کے آرٹیکل 2 کے تحت فوجی طاقت استعمال کرنے کا اختیار ہے۔ شام میں بدترین شکل اختیار کرتی مصیبت کا رخ پھیرنے اور خاص طور پر کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال اور پھیلاؤ روکنے میں امریکہ کا اہم قومی مفاد ہے۔

    گزشتہ برس عام شہریوں کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں سے حملے کے ردعمل میں اور شامی حکومت کو کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال روکنے کا پیغام دینے کے لیے ہم نے اس فوجی اڈے کو نشانہ بنایا جہاں سے یہ ہتھیار استعمال کیے گئے تھے۔

    صدر ٹرمپ نے امریکی فوج کو ہمارے اتحادیوں کے ساتھ مل کر شامی حکومت کے کیمیائی ہتھیاروں پر تحقیق، تیاری اور ان کی پیداوار کی اہلیتیں تباہ کرنے کی کارروائیوں کا حکم جاری کیا۔

    فرانس، برطانیہ اور امریکہ نے شامی کیمیائی ہتھیاروں کی تنصیبات پر حملے کی فیصلہ کن کارروائی کی۔

    یہ واضح ہے کہ اسد حکومت نے گزشتہ برس پیغام نہیں سمجھا تھا۔ اس مرتبہ ہمارے اتحادیوں اور ہم نے کڑی کارروائی کی ہے۔ ہم نے مشترکہ طور پر اسد اور اس کے قاتل معاونین کو ایک واضح پیغام دیا ہے کہ انہیں کیمیائی ہتھیاروں سے مزید حملے نہیں کرنے چاہئیں جن کے لیے وہ جوابدہ ہوں گے۔

    داعش کو شکست دینے کے اتحاد میں شامل 70 ممالک شام میں داعش کی شکست کے حوالے سے بدستور پرعزم ہیں۔ آج رات کیا جانے والا حملہ کسی ہدف پر، کسی بھی طرح کے حالات میں اور عالمی قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال روکنے کے عالمی عزم کو ظاہر کرتا ہے۔

    میں اس بات پر زور دینا چاہتا ہوں کہ یہ حملے شامی حکومت پر کیے گئے۔ ان حملوں میں ہم نے شہریوں اور غیرملکیوں کی ہلاکتوں سے بچنے کی بھرپور کوشش کی ہے۔

    وقت آ گیا ہے کہ تمام مہذب ممالک متحدہ کی معاونت سے جنیوا امن عمل کی حمایت کر کے شامی خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے فوری طور پر متحد ہو جائیں۔

    ایسے کیمیائی ہتھیاروں کے امتناع سے متعلق کنونشن کی مطابقت سے ہم ذمہ دار ممالک پر زور دیتے ہیں کہ وہ اسد حکومت کی مذمت کریں اور کیمیائی ہتھیاروں کا دوبارہ استعمال روکنے کے لیے ہمارے مضبوط عزم کا حصہ بنیں۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  6. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    [​IMG]


    "اسدحکومت نے روس اور ایران کی بھرپورحمایت سے سلامتی کونسل کو کئی مہینوں تک دھوکہ دیا"،سفيرنيکی ہيلی

    شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق قرارداد پر ووٹ کی وضاحت

    https://translations.state.gov/2018/04/10/شام-میں-کیمیائی-ہتھیاروں-کے-استعمال-سے-2/


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  7. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    235
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    شام ميں عام شہريوں کو کيميائ گيس کے حملوں سے محفوظ رکھنے کے ليے امريکہ کی جانب سے حاليہ فضائ بمباری کے بعد بعض راۓ دہندگان يہ غلط تاثر دے رہے ہيں کہ امريکی حکومت خطے ميں تشدد اور خون ريزی کی خواہش مند ہے۔


    اس الزام کا حقيقت سے کوئ تعلق نہيں ہے۔


    ياد رہے کہ شام ميں خانہ جنگی کے بعد انسانی بنيادوں پر جس ملک نے سب سے زيادہ امداد اور وسائل فراہم کیے ہيں، وہ امريکہ ہی ہے۔ شام ميں تشدد کے واقعات کے نقطہ آغاز سے اب تک بے گھر ہونے والے شہريوں اور ان کی بحالی کے ليے امريکہ کی جانب سے قريب 7۔7 بلين ڈالرز کی خطير امداد فراہم کی گئ ہے۔


    بعض راۓ دہندگان کی جانب سے تشہير کیے جانے والے غلط تاثر کے برعکس، امريکی حکومت شام ميں متاثرہ عام شہريوں تک ضروريات زندگی کی بنيادی اشياء فراہم کرنے ميں بدستور اپنا تعميری کردار ادا کررہی ہے۔


    نہتے شہريوں کی حفاظت کو يقینی بنانے کے ليے شام کی حکومت کے خلاف ليے جانے والے عملی اقدامات کے ساتھ ساتھ امريکی حکومت شہری آبادی کے ليے ہنگامی بنيادوں پر ہر طرح کے وسائل بھی فراہم کر رہی ہے جن ميں کھانے پينے کا سامان، خيمے، پينے کا صاف پانی، فوری طبی سہوليات اور ديگر سازوسامان شامل ہے جن سے شام کے اندر متاثرہ 1۔13 ملين شہری مستفيد ہو رہے ہيں۔ اس کے علاوہ شام سے ہجرت کرنے والے قريب 6۔5 ملين شہری جو خطے کے مختلف علاقوں ميں پناہ ليے ہوۓ ہيں، ان کو بھی ہر ممکن مدد فراہم کی جا رہی ہے۔


    امريکی صدر نے قومی سلامتی سے متعلق اپنی پاليسی وضع کرتے ہوۓ يہ واضح کيا تھا کہ امريکی حکومت يہ سمجھتی ہے کہ خانہ جنگی کے نتيجے ميں بے گھر ہونے والے پناہ گزينوں کو ان کے آبائ علاقوں کے قريب مدد فراہم کی جانی چاہيے يہاں تک کہ وہ حفاظت کے ساتھ واپس اپنے گھروں کو جاسکيں۔


    خطے ميں قريب 6۔5 ملين شامی پناہ گزينوں تک ہر ممکن امداد کی فراہمی ہمارے اس عزم اور ارادے کو واضح کرتی ہے کہ ہم خطے ميں امن اور استحکام کی بحالی کے خواہ ہيں۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr

اس صفحے کی تشہیر