دنیا تمام اپنی ، اُن آنکھوں پہ وار دوں

حیدرآبادی نے 'شعری انجمن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏26 اپریل 2012

  1. حیدرآبادی

    حیدرآبادی رکن

    مراسلے:
    656
    نعت
    (فرحان عزیز ، مدینہ منورہ)​

    میں خوش نصیب تجھ سے زیادہ ہوں اے فلک
    مسکن مرا ہے شہر مدینہ حضور ﷺ کا

    اپنی حیات و موت کا رخ دیکھ لیجیے
    اک آئینہ ہے آخری خطبہ حضور ﷺ کا

    پڑھ کر درود ان پہ ، معطر میں ہو گیا
    پاکیزہ کر گیا مجھے ، رشتہ حضور ﷺ کا

    بھٹکے ہوئے مسافرو ! آؤ چلیں ادھر
    سوئے بہشت جاتا ہے رستہ حضور ﷺ کا

    جو اس میں ڈوب جائے گا ، بیڑا اسی کا پار
    بحرِ فلاح و خیر ، طریقہ حضور ﷺ کا

    دنیا تمام اپنی ، اُن آنکھوں پہ وار دوں
    دیکھا جن آنکھوں نے کبھی جلوہ حضور ﷺ کا

    ان کی طرح کے لوگ ہی ان کے شمار ہیں
    اپنایا میں نے اس لیے حلیہ حضور ﷺ کا

    دشمن عزیز بن گئے ، یاروں کے ساتھ ساتھ
    جادو سکھا گیا مجھے ، اسوہ حضور ﷺ کا
  2. josh

    josh رکن

    مراسلے:
    166
    بہت خوب ماشااللہ بہت خوب ۔۔۔ خاص طور پر ۔۔ بھٹکے ہوے مسافرو آو چلیں ادھر سوے بہشت جاتا ہے رستہ حضور کا۔۔۔۔ صلی اللہ علیہ وسلم ۔

اس صفحے کی تشہیر