بیا ن حلفی و درخواست بابت انتقال وراثت

امتیاز احمد نے 'قانونی معاونت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏4 مارچ 2014

  1. امتیاز احمد

    امتیاز احمد رکن

    مراسلے:
    18
    کسی فوت شدہ شخص کی جائیداد کوحقیقی ورثہ کے نام منتقل کروانے کو انتقال وراثت کہا جاتا ہے۔اس کے لئے ورثہ میں سے کسی ایک کی جانب سے بیس روپے کے اسٹام پیپر پہ ایک بیان حلفی اورایک سادہ پیپر پہ متعلقہ افسر کے نام ایک درخواست لکھی جاتی ہے آپ کی سہولت کے لئے بیان حلفی اور درخواست کا خاکہ درج ذیل ہے۔

    بیا ن حلفی بابت انتقال وراثت

    منکہ: محمدعلی ولد بشیر ساکن لاڑکانہ تحصیل سٹی ضلع لاہور کا ہوں جوکہ من مظہر حلفاً بیان کرتا ہوں حسب ذیل ہے۔

    نمبر1: یہ کہ من مظہرحلفاً بیان کرتاہوں کہ میرے حقیقی والد مسمی بشیر ولد نزیر احمد عرصہ پیشترازیں مورخہ 06-06-2013کو اپنی ملکیتی اراضی واقع موضع لاڑکانہ تحصیل سٹی ضلع لاہور میں چھوڑ کر قضائے الہیٰ سے وفات پاچکے ہیں۔

    نمبر2: یہ کہ من مظہر حلفاً بیان کرتا ہوں کہ متوفی مذکور کے حقیقی اورجائزوارثان درج ذیل ہیں۔

    (1) مسماۃ خورشید بیوہ بشیر(بیوی) (2) منظوراحمد ولد ولد بشیر(بیٹا)

    (3) شوکت علی ولد بشیر (بیٹا) (4) ذوالفقار علی ولد بشیر (بیٹا)

    (5) مسماۃ منظوراں دختر بشیر (بیٹی) (6) مسماۃ امتیاز دختر بشیر(بیٹی)

    (7) مسماۃ شوکت دختر بشیر(بیٹی) (8) مسماۃ فوزیہ دختر بشیر (بیٹی)

    (9) مسماۃ صابرہ پروین دختر بشیر (بیٹی) (10) مسماۃ ممتاز دختر بشیر(بیٹی)

    یعنی متوفی مذکور کی ایک بیوہ، تین بیٹے اورچھ بیٹیاں ہیں۔وارثان مذکوران حیات ہیں اوران وارثان کے علاوہ متوفی مذکور کا کوئی اور حقیقی جائز وارث نہ ہے ۔

    نمبر 3:یہ کہ من مظہر حلفاً بیان کرتا ہوں کہ میں متوفی مذکور کا محکمہ مال کے کاغذات میں انتقال وراثت درج و تصدیق کرواناچاہتا ہوں اور حلفاً بیان کرتا ہوں انتقال وراثت درج وتصدیق کروانا مقصود ہے۔

    مندرجہ بالا امور میرے علم و یقین سے درست ہیں کوئی امر جھوٹ نہ ہے۔

    العبد------------------------------

    محمد علی محلف مذکور
  2. امتیاز احمد

    امتیاز احمد رکن

    مراسلے:
    18
    درخواست

    بخدمت جناب تحصیلدار صاحب حلقہ لاڑکانہ لاہور
    درخواست برائے کئے جانے انتقال وراثت
    جناب عالی!
    گزارش ہے کہ سائل حسب ذیل عرض پردا ز ہے۔
    یہ کہ سائل کے حقیقی والد مسمی بشیر ولد نزیر احمد عرصہ پیشترازیں مورخہ 06-06-2013کو اپنی ملکیتی اراضی واقع موضع لاڑکانہ تحصیل سٹی ضلع لاہور میں چھوڑ کر قضائے الہیٰ سے وفات پاچکے ہیں۔


    متوفی مذکور کی ایک بیوہ مسمات خورشید تین بیٹے مسمیان شوکت علی،منظوراحمد،ذولفقار علی اور چھ بیٹیاںمسماۃ منظوراں،مسماۃ شوکت ،مسماۃ فوزیہ ،مسماۃ صابرہ پروین ،مسماۃ امتیاز،مسماۃ ممتاز حقیقی اور جائز وارثان ہیں ۔ہمارے علاوہ متوفی مذکوریہ کا کوئی اور حقیقی اورجائز وارث نہ ہے۔ سائل متوفی مذکور کا محکمہ مال کے کاغذات میں انتقال وراثت درج وتصدیق کرواناچاہتا ہوں اس لئے سائل بذریعہ درخواست التماس کرتا ہوں حسب ضابطہ کاروائی کے بعد حلقہ پٹواری کو انتقال وراثت درج وتصدیق کئے جانے کے احکامات صادر فرمائیں۔
    حضور کی عین نوازش ہوگی۔
    العارض............................................
    محمدعلی ولد بشیر ساکن لاڑکانہ تحصیل سٹی ضلع لاہور

اس صفحے کی تشہیر