بلا وجہ بے لباس ہونے کی وجوہات

شاہد نذیر نے 'متفرق موضوعات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏13 مارچ 2014

  1. شاہد نذیر

    شاہد نذیر رکن

    مراسلے:
    486
    السلام علیکم ورحمۃ اللہ!
    مجھے اپنے ایک مضمون کی تیاری کے لئے Nudity پر کچھ مواد چاہیے۔ دماغی حالت درست نہ ہونے پر برہنہ ہونا علیحدہ بات ہے اسکے علاوہ جنسی خواہشات کی تکمیل کے لئے ننگا پن بھی مختلف بات ہے۔ مجھے بلا ضرورت ننگا ہونے کی تفصیل چاہیے جیسا کہ مغرب میں بعض لوگ بلاوجہ ہی ننگے رہتے ہیں یا کچھ ایسی مخصوص جگہیں ہیں جہاں کپڑوں کے ساتھ داخل نہیں ہونے دیا جاتا۔ میں جاننا چاہتا ہوں کہ بلاضرورت ننگا ہونے کی کیا وجوہات ہوتی ہیں اور کوئی شخص کس نفسیاتی وجہ پر ایسا کرتا ہے کیا جنسی شہوت سے بھی اس کا کوئی تعلق ہے؟
    • شکریہ شکریہ x 1
  2. فلک شیر

    فلک شیر منتظم

    مراسلے:
    1,157
    شاہد بھائی، nudity دراصل naturalismکا اظہار ہے ، جو کہ ایک تحریک تھی مغرب میں ، جس کے محرکین کا یہ ماننا تھا کہ انسان کو اپنے اصل اور فطری لائف سٹائل جو شروع سے تھا ، اسی کو اپنانا چاہیے اور کوئی دوسرا شخص جو کسی بھی طرز زندگی کا حامل ہو، اس کے خیالات کو قدر کی نگاہ سے دیکھنا ہر انسان پہ فرض ہے۔
    یوں سمجھ لیجیے کہ مغرب کے مشینی طرز زندگی کے خلاف ایک طرح کا احتجاج تھا یہ۔
    یہ برہنہ پن بھی کئی طرح کا ہوتا ہے، ذاتی نجی، سر عام، گروہی ۔۔۔
    • علمی علمی x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  3. فلک شیر

    فلک شیر منتظم

    مراسلے:
    1,157
    شہوانیت اس کے پیچھے بنیادی نکتہ نہیں ہوتا شاید، البتہ آپ یہ ضرور کہہ سکتے ہیں کہ شیطان نے اپنا وار فلسفہ اور فطرت پسندی کی آڑ میں مزین کر دیا ہے ، اور وہ ان لوگوں پر خوب چلا ہے، لیکن یہ اتنا عام نہیں ہے مغرب میں ویسے
    • پسند پسند x 2
  4. شاہد نذیر

    شاہد نذیر رکن

    مراسلے:
    486
    جزاک اللہ خیرا
    کیوں کہ آپ کے جواب سے میرا مطلوب حاصل نہیں ہوا اس لئے اب اصل بات کی طرف آتا ہوں۔ صوفیت پر اپنے دو مضامین کی تیاری میں صوفیت کے اثبات اور رد میں کئی کتابوں کا مطالعہ کیا اور پتا چلا کہ صوفیاء لباس کو زیادہ اہمیت نہیں دیتے بلکہ ان کا ماننا ہے کہ چاہو تو پہن لو اور اگر کبھی برہنہ بھی رہو تو کوئی حرج نہیں۔ اب صوفیوں کے ننگے پن کے پیچھے کیا وجہ ہے؟ اگر آپ کے علم میں ہے تو ضرور ہماری معلومات میں اضافہ فرمائیے۔
    • شکریہ شکریہ x 1
  5. فلک شیر

    فلک شیر منتظم

    مراسلے:
    1,157
    ان شاءاللہ اس پہ بات کرتے ہیں فرصت میں :)
    • پسند پسند x 1
    • شکریہ شکریہ x 1
  6. فلک شیر

    فلک شیر منتظم

    مراسلے:
    1,157
    جی شاہد بھائی، پہلے تو یہ بتائیے کہ تصوف کی جامع مانع تعریف اب تک آپ کیا کر پائے ہیں ؟
    یا سمجھ پائے ہیں؟
    اور اس سلسلہ میں آپ نے بنیادی کتب یا اصل مصادر و متون کون کون سے دیکھے ہیں ، پھر بات آگے چلاتے ہیں ان شاءاللہ۔
  7. محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس رکن

    مراسلے:
    46
    کیا جماع کے بعد کمرے میں ننگا چلنا جائز ہے

    میں نے ممنوعہ اشیاء ( غیرمباح ) کے بارہ میں آپ کی کلام پڑھی ہے جس میں آپ نے ننگے چلنا بھی ذکرکیا ہے ، بیڈ روم میں دروازے بند ہونے کی صورت میں بیوی سے ہم بستری کرکے ننگا چلنے کے بارہ میں کیا حکم ہے ؟
    الحمدللہ :

    آپ نے جیسا سوال میں ذکر کیا ہے اگرتو واقعی ایسا ہی ہو کہ سونے والا کمرہ بالکل علیحدہ اوراس کے دروازے کھڑکیاں بند ہوں توپھر یہ جائز ہے ، اس لیے کہ خاوند اوربیوی کے لیے ایک دوسرے کے جسم کو استمتاع و خوش طبعی کی نیت سے دیکھنا جائز ہے ، آپ مزيد تفصیل کےلیے سوال نمبر ( 3801 ) کے جواب کا بھی مراجعہ کریں ۔

    حفظ عورۃ کے بارہ میں نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے جو یہ وارد ہے کہ بیوی اورلونڈی کے علاوہ ہر ایک سے شرمگاہ کی حفاظت کرنی چاہیے وہ حدیث ذيل میں ذکرکی جاتی ہے :

    بہز بن حکیم بیان کرتے ہیں کہ میرے والد نے میرے دادا سے بیان کیا کہ وہ کہتےہیں میں نے نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے کہا : ہم اپنے پردہ والی جگہ میں کیاڈھانپیں کیا نہ ڈھانپیں ؟

    اوریہ حدیث اس پر بھی دلالت کرتی ہے کہ جب انسان اکیلا بھی ہو تواسے اپنا ستر چھپانا چاہیے ۔

    واللہ اعلم .

    شیخ محمد صالح المنجد

    کیا جماع کے بعد کمرے میں ننگا چلنا جائز ہے - islamqa.info
    • پسند پسند x 1
  8. josh

    josh رکن

    مراسلے:
    166
    بیوجہ ننگاپن مجنون اور پاگل پن کی علامت ہے اور کچھ نہیں ۔ لباس جہاں پردہ پوشی اور زینت کی علامت ہے وہیں انسان اور دوسرے حیوانوں میں فرق کی بھی علامت ہے ۔ انسان فطری طور پر باحیا ہے اورغیر فطری طور پر بے حیا اور جانور۔
    • زبردست زبردست x 1
  9. josh

    josh رکن

    مراسلے:
    166
    کمرے میں میاں بیوی دونوں اگر تنہا ہوں تو ننگا ہونے اور چلنے میں کویی حرج نہیں ہے لیکن بغیر ننگا بہتر ہے اسلیے کہ اللہ تعالی باحیا حالت کو پسند کرتا ہے۔
  10. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی رکن

    مراسلے:
    145
    حیوانیت کو انسانیت کا اعلیٰ درجہ بنا کر پیش کرنے والوں کی کوئی کمی نہیں۔ یہ زمانہ دجل کا زمانہ ہے۔ ننگے پن کے حق میں بہت مواد مل جائے گا مگر ۔۔۔ انسانی فطرت کا ایک بہت عام مظہر یاد دلا دوں: دو ڈھائی سال کا بچہ؛ اس کی اماں اس کے بڑے (چار پانچ سال عمر والے) بھائی یا بہن کو نہلا رہی ہوتی ہے؛ وہ ننھا بچہ بھی "شیم شیم" کہہ اٹھتا ہے۔
    بلوغت میں ننگا پن اور وہ بھی بلاضرورت؟ یہ انسانیت کا نہیں حیوانیت کا مزاج ہے۔ کرنے والا کوئی ہو، کتنے جواز لاتا رہے، اس سے کیا ہوتا ہے!۔
    • پسند پسند x 1

اس صفحے کی تشہیر