اہل خانہ کا اکٹھے کھانا کھانا۔

بنت مشتاق نے 'متفرق موضوعات (خواتین)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏15 مئی 2014

  1. بنت مشتاق

    بنت مشتاق رکن

    مراسلے:
    150
    دن بھر کی تھکان کے بعد رات کا کھانا اکٹھے کھانے کو کچھ لوگ ایک بوجھ یا زبردستی سمجھتے ہیں لیکن سچ پوچھا جائے تو رات کو اہل خانہ کا مل جل کر کھانا کھانے اور دن بھر کی باتیں گھر کے تمام اراکین سے بانٹنے جیسا سکھ اور کسی بات میں نہیں۔ ہیوسٹن کے بیلر کالج آف میڈیسن کے ایک پروفیسر کے اس موضوع پر تفصیلی مطالعہ کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے رات کا کھانا گھر کے تمام اراکین کا اکٹھاکھانا نہ صرف زندگی کا ایک اہم حصہ ہے بلکہ اس سے بڑھتے وزن پر بھی قابو پانا کسی حد تک ممکن ہو جاتا ہے رات کو مل جل کر کھانا کھاتے وقت دن بھر کے کچھ کھٹے کچھ میٹھے تجربات ایک دوسرے کے ساتھ بانٹ سکتے ہیں اس سے اپنائیت اور محبت کا احساس تو ملتا ہی ہے، دل پر پڑا ہوا دن بھر کا بوجھ بھی تقسیم ہو جاتاہے۔

    اکٹھے کھانا کھانے کے فوائد ہر خاندان کے لئے مختلف ہو سکتے ہے کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ساتھ میں کھانا کھاتے وقت بچوں کو میز پر کھانا کھانے کے طور طریقے سکھا سکیں کسی خاندان کے خیال میں اس وقت باہمی محبت، باہمی خیال تبادلہ، دوسروں کو احترام دینا یا دوسروں کی باتیں دھیان سے سننا وغیرہ سیکھا یاجا سکتا ہے۔

    دن کی بھاگ دوڑ کے بعد کھانے کا وقت پرسکون کا ہوتا ہے اکٹھے کھانا کھا کر اسے دلچسپ بنایا جا سکتا ہےدن بھر کے کام پر ایک سرسری نظر ڈالی جا سکتی ہے اور اگلے دن کی منصوبہ بندی کا خاکہ تیار کیا جا سکتا ہے. "آپ کا دن کیسے گزرا؟" یا "آج کے پورے دن میں سب سے اچھی بات کون سی ہوئی؟" ایسے سوال دل کے بوجھ کو ہلکا کر سکتے ہیں۔اس وقت دن بھر کی تمام دوڑ دھوپ سے تھوڑا آرام تو ملتا ہی ہے ساتھ میں اگلے دن کے کام کی منصوبہ بندی بھی کی جاسکتی ہے۔

    بچوں میں خود داری اور اعتماد ابھارنے کا یہ بہترین وقت ہے۔ بچوں کی باتوں کو توجہ سے سنتے ہوئے ان کے اچھے کاموں پہ ان کو شاباش دیتے ہوئے ان الفاظ کا استعمال کیا جا سکتا ہے کہ آپ کا کام تعریف کے قابل ہے یا تمہارے اس کام پر ہمیں فخر ہے اس طرح کہہ کر ہم بچوں کا حوصلہ بڑھا سکتے ہیں۔ایسے اچھے ماحول میں کھانے کی میز پر کسی بھی گھر کے رکن کو ایک دوسرےکا دل دکھانے والی بات نہیں کرنی چاہئے۔ایسی باتوں کو کسی دوسرے وقت کے لئے سنبھال رکھنا چاہیے۔

    کھانے کی میز پر جگہ کے لئے بچوں میں لڑائی ہوتے ہمیشہ ہی سے دیکھا گیا ہے اگر انہیں ان کی منتخب جگہ پر بیٹھنے دیا جائے تو اس سے اچھی کوئی بات نہیں اس کے باوجود اگر بات بگڑتی نظر آئے تو بڑوں کو اس مسئلہ میں ان کی مدد کر دینی چاہیے۔باپ کے آرام اورپرسکون ماحول میں کھانا کھلانے لیے ماں بچوں کو پہلے کھانا کھلانا چاہتی ہے لیکن بچے اپنے باپ کی کمی محسوس کر سکتے ہیں کھانے کی میز پر کھانا کھاتے وقت باپ کو نہ پا کر وہ محسوس کرتے ہیں کہ باپ کے دل میں ان کے لئے محبت اور دلچسپی نہیں ہے اس لئے ایسا نہ ہونے دیں۔

اس صفحے کی تشہیر