امریکہ ايک اور امريکی منصوبہ

fawad نے 'خبروں کی دنیا' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏11 ستمبر 2015

  1. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی حکومت کی جانب سے پاکستانی پولیس کو دہشت گردی اور

    عسکریت پسندی کے خلاف لڑنے کیلئے گیارہ بکتر بند گاڑیوں کی فراہمی

    امریکی محکمہ خارجہ کے قائم مقام معاون سیکرٹری ڈیوڈ رینز نے آج گیارہ بکتر بند گاڑیاں اسلام آباد پولیس ، فرنٹیئر کانسٹیبلری اور خیبر پختونخواپولیس کےحوالے کیں، جن کی مالیت ۲۸ کروڑ روپے (۲۷ لاکھ ڈالر) سے زیادہ ہے۔ امریکی حکومت کی جانب سے اِن بکتر بند گاڑیوں کی فراہمی پاکستانی عوام کے تحفظ و سلامتی کو بہتر بنانے کے لئے پاکستان کے ساتھ ملکرکام کرنے کے عزم کی عکاس ہے۔ تقریب میں وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال، اسلام آباد پولیس کے انسپکٹر جنرل ڈاکٹر سلطان اعظم تیموری، فرنٹیئر کانسٹیبلری کے کمانڈنٹ لیاقت علی خان اور خیبر پختونخواپولیس کے ایڈیشنل انسپکٹر جنرل ڈاکٹر محمد نعیم خان نے بھی شرکت کی۔

    قائم مقام معاون سیکرٹری خارجہ ڈیوڈ رینزنے کہا کہ پاکستانی پولیس عوام کو محفوظ رکھنے کے لئے ہر روز قربانیاں دیتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور پاکستان ،دونوں ملکوں میں ہم اپنے عوام کی حفاظت کے لئے پولیس پر انحصار کرتے ہیں اور ہم دہشت گردی کے خلاف لڑائی اور پاکستان میں سلامتی و قانون کی حکمرانی کے لئے پاکستانی عوام کا ساتھ دیتے رہیں گے۔

    امریکی کمپنی لینکو نے یہ گاڑیاں بنائی ہیں جو دُور دراز اور دشوار گزار علاقوں میں کام کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں اور جرائم، دہشت گردی اور عسکریت پسندی کے سدباب اور بیخ کنی کے لئے سویلین سیکورٹی فورسز کے لئے معاون ثابت ہوں گی۔ یہ بکتر بند گاڑیاں پولیس کی کارروائی کی صلاحیت میں بہتری لانے اور دہشت گردوں، عسکریت پسندوں اور منشیات کے اسمگلروں سے درپیش خطرات کا مقابلہ کرتے وقت اہلکاروں کی زندگیاں بچانے کے لئے اشد ضروری ہیں۔ یہ گروہ پاکستان بھر میں پولیس اہلکاروں کو نشانہ بناتے ہیں۔ نیشنل پولیس بیورو کے مطابق تقریباً ساڑھے چھ ہزار پولیس اہلکار پاکستان میں فرائض منصبی کی ادائیگی کے دوران اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرچکے ہیں۔

    امریکی ادارہ برائے امور ِانسداد ِمنشیات و نفاذ ِقانون (آئی این ایل) ،جس نے اِن بکتر بند گاڑیوں کے لئے فنڈز مہیا کئےہیں ، جرائم و بدعنوانی کے انسداد اور منشیات کے دھندے کی روک تھام، پولیس کے اداروں کو بہتر بنانے اور شفاف و جوابدہ نظام عدل کے فروغ کے لئے ۹۰ سے زائد ملکوں میں مصروف ِعمل ہے۔


    آئی این ایل کے بارے میں مزید جاننے کے لئے درج ذیل لنک ملاحظہ کیجئے:

    Bureau of International Narcotics and Law Enforcement Affairs (INL)

    ###


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  2. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    نسٹ اور یوای ٹی پشاورسے ۳۱ پاکستانی انجینئرزایری زونا اسٹیٹ یونیورسٹی کے تبادلہ پروگرام میں شرکت کیلئے امریکہ روانہ


    اسلا م آباد (۵ ِجنوری، ۲۰۱۸ء) __ امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) اور پاکستانی حکام نے امریکہ تعلیم حاصل کرنے کے لیے جانے والے نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اور یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پشاور (یو ای ٹی پشاور) کے ۲۴ طالب علموں اور اساتذہ کو رخصت کیا ، جہاں وہ ایری زونا اسٹیٹ یونیورسٹی (اے ایس یو) میں ایک سمسٹر گزاریں گے۔امریکی مالی معاونت سے چلنے والے اس تبادلہ پروگرام کے تحت ، یہ طالب علم اور اساتذہ پاکستان کو درپیش توانائی کے شدید بحران کے حوالے سے تحقیق کریں گے۔


    یہ انرجی انجینئرنگ سے تعلق رکھنے والے طلبہ اور فیکلٹی ممبران کا پانچواں گروپ ہے جو کہ امریکہ میں یو ایس ایڈ کی مالی معاونت سے چلنے والے یو ایس پاکستان سنیٹرز فار ایڈوانس سٹڈیز اِن انرجی (یو ایس پی سی اے ایس۔ای) میں شرکت کیلئے جا رہے ہیں۔ امریکہ میں اپنے چار ماہ قیام کے دوران یہ طلبہ اور فیکلٹی ممبران اے ایس یو کی تجربہ گاہوں میں امریکی پروفیسروں کی زیر نگرانی شمسی پینلز اور بیٹریوں کے حوالے سے عملی تحقیق کے دوران اپنے تجربات کریں گے اور مشاہدات اور نتائج کے تجزیے پر کام کریں گے۔ اس کے علاوہ وہ امریکہ میں بجلی کی پیداوار کے طریقہ کار کو جاننے کیلئے صنعتی مراکز کا دورہ بھی کرینگے۔


    یو ایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جیری بسن نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ تبادلہ پروگرام جو توانائی کے شعبے میں تحقیق پر مبنی ہے ،امریکہ اور پاکستان کے درمیان شراکت داری کی علامت ہے تاکہ مضبوط تعلیمی ادارے پروان چڑھائے جائیں ۔ انہوں نے طلبہ پر زور دیا کہ وہ اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اے ایس یو کے تجربہ کار پروفیسروں کی زیر نگرانی توانائی کے شعبے میں اپنی تحقیق مزید نکھاریں۔


    پروگرام میں شرکت کیلئے جانے والے طلبہ نے بین الاقوامی محققین کے ساتھ مل کر کام کرنے پر جوش و جذبے کااظہار کیا۔


    اب تک نسٹ اور یو ای ٹی پشاور کے ۱۱۰ طالب علموں نے تبادلہ پروگرام کامیابی سے مکمل کر لیے ہیں اور وہ توانائی کے منصوبوں پر کام کر رہے ہیں۔ ایسے تبادلہ پروگرام، فیکلٹی ممبران کو موقع فراہم کرتے ہیں کہ وہ اپنی تدریسی صلاحیتوں کو نکھاریں اور کارپوریٹ سیکٹر اور تدریسی عملے کے درمیان کامیاب اشتراکِ کا ر کو مضبوط بنائیں جبکہ طلبہ اپنی تحقیق اور صنعتوں کے متعلق اپنے علم وآگہی پر توجہ مرکوز کریں۔


    یو ایس پی سی اے ایس۔ای کا مقصد نصاب کی تیاری، تحقیق،نئی تجربہ گاہوں کا قیام اور تبادلہ پروگرام شامل ہیں۔ امید ہے کہ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے زیر اہتمام نسٹ اور یو ای ٹی پشاور کا پاکستان کے دیرپاتوانائی کے بہترین تحقیقی مرکز بنیں گےاور یہ مستقبل میں توانائی کی اطلاقی تحقیق کے شعبے میں گریجویٹس کی نئی نسل تیار کریں گے۔ یہ پروگرام خواتین اور سہولیات سے محروم نوجوانوں کی ترقی کے نئے معیار مقرر کرے گا۔


    تعلیمی تبادلہ کے پروگرام یو ایس ایڈ کے اس پانچ سالہ پروگرام کا حصہ ہے جس کے تحت امریکی حکومت نے یو ایس پاکستان سینٹرز فار ایڈوانسڈ سٹڈیز پروگرام کے لئے ۱۲۷ ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے۔ اس پروگرام کا مقصد پاکستان کی توانائی، آبی،زرعی اور غذائی قلت کے حوالے سے مسائل کے جد ت پر مبنی قابل عمل حل تلاش کرنا ہے۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  3. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    یو ایس ایڈ کی طرف سے لڑکیوں کی ترقی وکامیابی کیلئے تربیتی نشست


    اسلام آباد (۲۳ ِجنوری ۲۰۱۸ ء)۔ حکومت ِامریکہ نے تعلیم ، اقتصادی امور اور صنفی مساوات کے حوالے سے منعقد ہونے والے ایک مباحثہ کے دوران پاکستانی خواتین کے لیے زیادہ سے زیادہ مواقع کے بارے میں اپنے عزم کا اعادہ کیا۔

    امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) کے قائم مقام ڈپٹی مشن ڈائریکٹر کرسٹوفر اسٹیل نے درس وتدریس ، سرکاری و نجی شعبوں اور این جی اوز سے تعلق رکھنے والی سو سے زیادہ خواتین سے خطاب کیا ،جنہوں نے یوایس ایڈ کی معاونت سےمنعقد کی جانے والی تربیتی نشست میں شرکت کی۔ کرسٹوفر اسٹیل نے کہا ہم سب کو یہ سمجھ لینا چاہیئے کہ ایک عورت کو آگے بڑھنے کے لئے ضروری ہے کہ اُسے سیکھنے کے مواقع فراہم کئے جائیں۔اُنہوں نے کہا کہ یہ بھی اُتنا ہی ضروری ہے کہ جس ماحول میں خواتین کام کرتی ہیں وہ اُن کو اپنے طےشدہ معیار کے مطابق کامیابی کی منزل تک پہنچنے میں سازگار ہو۔ یوایس ایڈکا"پاتھ ویز ٹو سکسیس پروگرام" پاکستانی عورتوں اور لڑکیوں کو ایسی مہارتیں سیکھنے میں مدد کرتا ہے، جن کو بروئےکار لاتے ہوئے وہ اپنا کام بہتر طریقے سے سرانجام دے سکتی ہیں۔ اُ ن کی دفتری امور کی تربیت، ملازمت کے مواقع تلاش کرنے اور ذاتی کاروبار کو فروغ دینے کی حوصلہ افزائی بھی کی جاتی ہے۔ کرسٹوفر اسٹیل نے کہا کہ نوجوان لڑکیوں کو علم تک رسائی اور فنی مہارتیں فراہم کر کے ہم اُنہیں اِس قابل بناتے ہیں کہ وہ اپنی، اپنے خاندان ، اپنی برادری اوراپنے ملک کی ترقی میں کردار ادا کریں۔

    اس مباحثے کی میزبان یو ایس ایڈ کے "پاتھ ویز ٹوسکسیز نیشنل مینٹورِنگ پروگرام " کی مینٹورِنگ کو آرڈینیٹر منیزہ ہاشمی تھیں۔ پہلے سیشن کے پینل ارکان اس منصوبے سے مستفید ہونے والی خواتین اور اُن کےوالدین تھے۔ جبکہ دوسرے سیشن کےپینل ارکان میں پاکستانی اولمپک پیراک کِرن خان، پاکستان ویمن فٹبال ٹیم کی کپتان ہاجرہ خان، پیپسی کولا کی کلچر، انگیجمینٹ اور ڈائیورسٹی افسر عامرہ مبشر، "ہم "ٹی وی کے سینئرنائب صدر اطہر وقار عظیم، ٹیکنالوجی کاروبار سے منسلک ڈینیئل شرف اور ایئر بلیو کے سیلز ڈائریکٹر فہیم حامد شامل تھے۔

    یو ایس ایڈ کے ٹریننگ فار پاکستان پروگرام کے تحت صوبہ سندھ اور خیبر پختونخواکے پسماندہ علاقوں سے تعلق رکھنے والی تین ہزار لڑکیوں کی معاونت کی گئی ہے جس سے اُنہیں مناسب روزگار میسرآئے ۔

    یو ایس ایڈ کے تعاون سے جاری اس تربیتی پروگرام میں اب تک آئی ٹی، تجارت، قانون، مائیکرو فنانس ،بینکنگ ،درس وتدریس ، فنون ِ لطیفہ ، کھیل اورمیڈیا سے وابستہ تیس سے زیادہ معروف اور کامیاب خواتین نے رضاکارانہ طور پر تین سو سے زیادہ لڑکیوں کو تربیت فراہم کی ہے۔یہ کامیاب خواتین اِن نوجوان لڑکیوں اور اُن کے اہلخانہ سے مہینے میں دوبار ملاقات کرتی ہیں اور اُنہیں بتاتی ہیں کہ مشکلات پر کیسے قابو پانا ہے اور اپنے شعبے میں کامیابی کی راہ کیسے ہموار کرنی ہے۔

    یو ایس ایڈ کاٹریننگ فار پاکستان پروگرام تعلیم، توانائی، اقتصادی ترقی و زراعت، صحت عامہ ، استحکام اور نظم ونسق کے شعبوں میں تربیت کا ایک کثیرسالہ منصوبہ ہے،جس کے تحت فراہم کی جانے والی تربیت کے لئے مختلف وسائل کوبروئے کار لاکر حکومت ِپاکستان کے ترقیاتی اہداف کے مطابق یو ایس ایڈ کے اشتراک ِ کاروں کی اہلیت کو بہتر بنایا جاتا ہے ۔

    یو ایس ایڈ اور پاکستان میں اس کے کام کے بارے میں مزید جاننے کے لیے درج ذیل ویب سائیٹ ملاحظہ کریں:

    www.usaid.gov/pakistan


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  4. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی سفارتخانہ اور فاطمہ جناح یونیورسٹی برائے خواتین کے درمیان سوزین بی انتھونی ریڈنگ روم کیلیے تجدید اشتراک


    امریکی سفارتخانہ کی منسٹر قونصلر برائے امور عامہ کیتھرین کراکرٹ اور فاطمہ جناح یونیورسٹی برائے خواتین کی وائس چانسلر ڈاکٹر ثمینہ امین قادر نے بدھ کے روز ایک تقریب کے دوران جامعہ میں سوزین بی انتھونی کے نام سے منسوب دارالمطالعہ کیلئے اشترک کار کی تجدید کے حوالے سے مفاہمت کی ایک یادداشت پر دستخط کئے۔

    تقریب میں ڈاکٹر قادر نے امریکی سفارتخانہ کی جانب سے اس دارالمطالعہ کے توسط سے امریکی تعلیمی اداروں کے ساتھ تبادلہ اور تحقیقی صلاحیتوں کے فروغ کیلئے مواقع کی فراہمی کو سراہا۔ کیتھرین کراکرٹ نے معاشرے میں خواتین کی اہمیت پر زور دیا اور فاطمہ جناح وویمن یونیورسٹی اور سوزین بی انتھونی ریڈنگ روم کی پاکستان میں تعلیم کے فروغ کیلئے خدمات کو سراہا۔

    ۲۰۰۸ء میں قائم ہونے والا سوزین بی انتھونی ریڈنگ روم امریکی سفارتخانہ اور فاطمہ جناح وویمن یونیورسٹی کے مابین دس سالہ اشتراک کار کا نتیجہ ہے۔ یہ دارالمطالعہ سوزین بی انتھونی کے نام سے منسوب ہے جو کہ انیسویں صدی میں امریکہ میں خواتین کیلئے ووٹ، تعلیم ،بہترکام کے ماحول اور غلامی کے خاتمے کے حوالے سے جدوجہد کیلئے مشہورہیں۔ یہ دارالمطالعہ باقاعدگی سے جامعہ کی طالبات ، اساتذہ اور مہمانوں کیلئے انگریزی زبان کی تعلیم، تعلیمی مشاورت اور امتحانات کیلئے وسائل کے علاوہ امریکہ میں تبادلہ پروگرام کے شرکاء، ثقافتی پروگرام اور امریکہ کے بارے میں معلومات کے حوالے سے مختلف پروگراموں کا انعقاد کرتا ہے۔ دارالمطالعہ کی کتب اور ریڈنگ کلب آنے والوں میں انتہائی مقبول ہیں۔ یہاں صنفی بنیادوں پر تشدد اور امتیاز کے خلاف شعور بیدار ی اور کاروباری خواتین میں آگاہی کے فروغ کیلئے مختلف پروگرام بھی منعقد کئے جاتے ہیں۔ سوزین بی انتھونی ریڈنگ روم کے 'فرینڈز آف دی کارنر' رضاکارانہ پروگرام طالبات کو موقع فراہم کرتا ہے کہ وہ اپنی آگاہی میں اضافہ کریں اور خو د کو پیشہ وارانہ زندگی کیلئے تیار کر سکیں۔ اپنے دورے کے دوران کیتھرین کراکرٹ نے حال ہی میں فارغ التحصیل ہونے والی طالبات میں ایوارڈز تقسیم کئے اور انہیں مبارکبادبھی دی۔

    سوزین بی انتھونی ریڈنگ روم پاکستان میں امریکی سفارتخانہ کے ۱۸ لنکن کارنرز کا حصہ ہے۔ لنکن کارنرز ریسورس سنٹر ز اور پاکستانی لائبریریوں، جامعات اور ثقافتی مراکز کے اشتراک سے تقریبات منعقد کرنے کیلئے جگہ فراہم کرتے ہیں۔ یہ پاکستانی اور امریکیوں کے درمیان کھلے مکالمہ کیلئے پلیٹ فارم فراہم کرتے ہیں جس کا مقصد عوامی سطح پر تعلقات کو مضبوط کرنا ہے۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  5. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    یونیورسٹی کالج لاہور کے طالب علموں کی بین الاقوامی فرضی عدالتی مقابلہ میں اول پوزیشن

    یونیورسٹی کالج لاہور کے طالب علموں کی ایک ٹیم نے امریکی سفارتخانہ کی اعانت سے منعقد ہونے والے فلپ سی جیسپ بین الاقوامی قانونی کورٹ مباحثہ مقابلے میں اول انعام حاصل کیا۔ سابق چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی اختتامی مقابلوں کے چیف جج تھے۔

    پاکستان کالج آف لاء لاہور کی ٹیم دوسرے اور قائد اعظم لاء کالج کی ٹیم تیسرے نمبر پر رہی۔ مقابلے میں نمایاں تینوں ٹیمیں اپریل میں واشنگٹن ڈی سی میں پچانوے ممالک کی ٹیموں کے مابین ہونے والے فائنل میں شرکت کریں گی۔

    انسٹھ سال سے جاری ان مقابلوں میں پاکستان گذشتہ تین سال سے حصہ لے رہا ہے۔ امسال قانون کی تعلیم وتدریس سے وابستہ اکیس اداروں کے۱۱۷ پاکستانی طالب علموں نے فرضی طور پر اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے عالمی عدالت برائے انصاف کے سامنے ہونے والے فرضی تنازعہ کو حل کرنے کیلئے منعقد ہونے والے مقابلے میں حصہ لیا۔ پچانوے ممالک سے تعلق رکھنے والے ۶۴۵شرکاء کے ساتھ" جیسپ "دنیا کا سب سے بڑا فرضی عدالتی مقابلہ ہے۔

    اس چار روزہ پروگرام کیلئے اعانت امریکی سفارتخانہ شعبہ عالمی ادارہ برائے انسداد منشیات و نفاذ قانون (آئی این ایل) اور آفس آف اوورسیز پراسیکیوشن ڈویلپمنٹ اسسٹنس اینڈ ٹریننگ نے کی تھی۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    USUrduDigitalOutreach - Home | Facebook

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  6. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    خواتین کے عالمی دن پر یو ایس ایڈ کی طرف سے طالبات کے اعزاز میں تقریب


    خواتین کے عالمی دن کے موقع کی مناسبت سے ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) میں ایک تقریب منعقد ہوئی ہے ، جس میں یو ایس ایڈ کی مالی اعانت سے اہلیت اور ضرورت کی بنیادپر دیئے جانے والے وظائف کے پروگرام ( ایم این بی ایس پی) سے مستفید ہونے والی لڑکیوں کی کامیابیوں کا جشن منایا گیا۔

    یو ایس ایڈ کی قائم مقام مشن ڈائریکٹر ہیلن پٹاکی نے اِس موقع پر ایچ ای سی حکام، اشتراک کار جامعات اور وظائف حاصل کرنے والی خواتین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین پاکستان کی نصف آبادی کی نمائندگی کرتی ہیں اور وہ ملک کی سماجی و معاشی ترقی کا لازمی حصہ ہیں ،مگر یہ بدقسمتی ہے کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں میں خواتین کا تناسب مساوی نہیں ہے ۔پاکستان کوبہت سے مسائل کا سامنا ہے لیکن ہمیں نہیں معلوم کہ نصف آبادی کو نظر انداز کرکے ہم ان مسائل کے کتنے ممکنہ حل تلاش کر نے سے محروم ہیں۔

    ہیلن پٹاکی نے کہا کہ ہمارے۲۰۱۷ء کے پروگرام کا مقصد کم از کم نصف وظائف خواتین کو فراہم کرنا تھے اور یہ بات میرے لیے باعث فخر ہے کہ یو ایس ایڈ اور ایچ ای سی کی مشترکہ کوششوں اوراُن بہت سی خواتین جنہوں نے اپنی لگن اور قابلیت کی بدولت قدم آگے بڑھایا ،ہم نے اپنے مقرر کردہ ہدف سے بڑھ کر کامیابی حاصل کی۔ آج تک اسکالرشپ وصول کرنے والے طلبا وطالبات میں ۵۲ فیصد لڑکیاں شامل ہیں ۔ ہم نے دس سال قبل لڑکیوں کے مستقبل میں سرمایہ کاری شروع کی اور آج یہ دیکھ کر خوشی محسوس ہو رہی ہے کہ ان وظائف کے ثمرات طالبات اور پاکستان دونوں کے لئے آنا شروع ہوگئے ہیں۔

    ایم این بی ایس پی پاکستان کے ذہین مگر مالی طور پر کمزور نوجوانوں کو ٹیوشن اور دیگر ضروری اخراجات کے لیے وظائف دیتا ہے تا کہ وہ ملک بھر میں موجود یو ایس ایڈ کی تیس اشتراک کار جامعات میں اپنی بیچلرز یاماسٹرز سطح کی ڈگری حاصل کر یں ۔ پروگرام یہ تسلیم کرتا ہے کہ لڑکیوں کے لئےاعلیٰ تعلیم کاحصول زیادہ مشکل ہے لہٰذا اعلیٰ تعلیم تک رسائی حاصل کرنے کے لئے لڑکیوں کو درپیش رکاوٹوں کو سمجھنے اور انہیں دُورکرنے کے لئے خصوصی کوششیں کی گئی ہیں۔ اس پروگرام کے تحت لڑکیوں کے کالجوں سے رابطہ کیا گیا تا کہ مالی طور پر کمزور لڑکیوں کو وظائف کے حصول کے لیے درخواست دینے کی ترغیب دی جائے ،جبکہ زرعی سائنس، بزنس ایڈمنسٹریشن، انجینئرنگ، میڈیسن اور سماجی علوم کے مضامین کو بھی وظائف کے پروگرام میں شامل کیا گیا۔

    ایچ ای سی کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر مختار احمد نے تقریب سے خطاب میں پاکستان میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ میں تعاون پر یو ایس ایڈ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اعلیٰ تعلیم کے منصوبوں میں سرمایہ کاری سے حکومت ِپاکستان کے مقرر کردہ اہداف حاصل کرنے اور تمام شہریوں کو تعلیم کے مساوی مواقع فراہم کرنے کی قومی کوششوں کو تقویت ملی ہے۔ یہ خوش آئند ہے کہ یو ایس ایڈ نے طالبات کے لئے اعلیٰ تعلیم کے حصول کے مواقع فراہم کرنے کے لئے تیس اشتراک کاراداروں اور ایچ ای سی کے ساتھ مل کر خدمات سرانجام دیں ۔

    اس موقع پر وظائف حاصل کرنے والی دو طالبات نے اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کی راہ میں حائل رکاوٹوں کا ذکر کیا اور بتایا کہ ایم این بی ایس پی نے کیسے اُن کی زندگیوں کو تبدیل کیا۔ انہوں نے زور دیا کہ معاشرے میں مثبت تبدیلی فقط خواتین کی تعلیم کے مواقع میں سرمایہ کاری کے ذریعے سے ہی ممکن ہے اور یہ کہ بااختیار، تعلیم یافتہ خواتین پاکستان کے روشن مستقبل کو یقینی بنانے کے لئے لازمی ہیں۔

    یو ایس ایڈ کےزیر انتظام اہلیت اور ضرورت کی بنیادپر دیئے جانے والے وظائف کا پروگرام پاکستان میں ذہین اورمستحق طلباوطالبات کی مالی مدد، معیاری تعلیم تک رسائی بہتر بنانے اور پاکستان کی معاشی ترقی کے لئے ضروری شعبہ جات میں تدریسی رجحان کی حوصلہ افزائی کے لئے ایچ ای سی کے مقرر کردہ اہداف کے ساتھ بھی ہم آہنگ ہے۔ ۲۰۰۴ء سے اب تک، یو ایس ایڈ نے دور دراز علاقوں میں رہنے والے طالبعلموں کوزراعت، بزنس ایڈمنسٹریشن، انجینئرنگ، میڈیسن اور سماجی علوم کے مضامین میں ۴۹ سوسے زائد وظائف دیئے ہیں۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    USUrduDigitalOutreach - Home | Facebook

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  7. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]

    سفیر ڈیوڈ ہیل کی جانب سے پاکستان میں توانائی کے شعبے میں امریکی تعاون کا اعادہ

    اسلام آباد میں متعین امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے آج اسلام آبادمیں ایک میڈیا گروپ کے زیر اہتمام پاکستان میں توانائی اور بجلی کے شعبے کے حوالے سے منعقدہ سیمینار میں شرکت کی۔ وفاقی وزیر برائے بجلی اویس احمد خان لغاری اور چین، جرمنی اور ترکی کے سفیروں نے بھی 'پاک پاور: ترقی اور آگے کا لائحہ عمل' کے موضوع پر اس سیمینار میں حصہ لیا۔

    پینل مباحثے کے دوران ، سفیر ہیل نے زور دیا کہ امریکہ ۱۹۵۰ ءکی دہائی سے پاکستان میں توانائی کے شعبے میں تعاون میں مصروف عمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کو فخر ہے کہ پچھلے ۷۰ برسوں میں اس نے توانائی کے شعبہ میں پاکستان کی اتنی مدد کی ہے کہ وہ اپنے ہر چھٹے شہری کو بجلی میسر کر سکے۔سفیر ہیل نے کہا کہ امریکہ پاکستانی حکام کے ساتھ پالیسی سازی میں اچھے نظم و نسق اور بہترین اقدامات کو شامل کرنے پر کام کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پاکستان کو امریکی محکمہ توانائی کے اعلیٰ سطحی عہدیداروں اور ماہرین اور جامع توانائی منصوبے تک رسائی فراہم کی ہے۔سفیر ہیل نےاس امید کا اظہار کیا کہ امریکی کمپنیاں پاکستان کے توانائی شعبے میں شمولیت اور مسابقت کے لئے شرکت کریں گی۔

    ####

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  8. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    امریکی سفارتخانہ کی جانب سے پشاور یونیورسٹی کے طالبعلموں کے اعزاز میں تقریب


    اسلام آباد (۱۷ ِاپریل ۲۰۱۸) : امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے پشاور یونیورسٹی کے شعبہ بین الاقوامی تعلقات کے طالبعلموں کے ایک گروپ کو پاک-امریکہ تعلقات اور فروغ امن میں سفارتکاری کے کردار کے موضوع پر ایک جاندار مباحثے کی میزبانی کی ۔ طالبعلموں کے ساتھ گفتگو کرتےہوئے سفیر ہیل نے بین الاقوامی تعلقات کی تعلیم حاصل کرنے کے بارے میں ذاتی تجربے اور پیشہ ورانہ زندگی پر اس کے اثرات کے بارے میں اظہار خیال کیا۔ ۔ ان کا کہنا تھا کہ سفارتکار ی انتہائی مشکل مسائل کا حل نکالتی ہے اور پاکستان کی آئندہ نسل کے رہنماؤں میں ، جن کی آپ نمائندگی کرتے ہیں، علاقائی امن اور استحکام لانے میں مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔


    طالبعلموں کے ساتھ سفیر ہیل کی ملاقات آدھے دن کے پروگرام کا حصہ تھی۔ امریکی افسران نے بھی طالبعلموں کو سفارتخانے کے کام کے بارے میں آگہی دی اور امریکہ میں پاکستانی طالب علموں کے لیے موجود حصول تعلیم اور تبادلہ پروگراموں کے بارے میں تفصیلات بتائیں۔ ۔ انہوں نے امریکی سفارتکاروں کے ساتھ ظہرانے میں شرکت کی اور سفارتخانے میں آویزاں کچھ پاکستانی فن پارے دیکھے۔ طالبعلموں نے امریکی سفارتخانہ کے ماحول کی بھی تعریف کی۔ بھی


    اس موقع پر پشاور یونیورسٹی کی شعبہ بین الاقوامی تعلقات (انٹرنیشنل ریلیشنز ) کے چیئرمین سید حسین شہید سہروردی نے کہا کہ یہ میرے طلبہ کے لیے کسی سفیر سے بات چیت اور پاکستان کے امریکہ کے ساتھ تعلقات کے بارے میں گہرا ادراک حاصل کرنے کا منفرد موقعہ تھا ۔ امریکی سفارتکاروں کے سامنے اپنا نقطہ نظر بیان کرنے کا موقع ملنا امریکہ کے ساتھ موجود ہمارے مضبوط تعلیمی تعاون کی عکاسی کرتا ہے۔


    پاکستان میں امریکہ کے تعلیمی اقدامات کے بارے میں مزید جاننے کے لیے درج ذیل ویب سائٹس ملاحظہ کیجیے:


    http://pk.usembassy.govاورhttp://usefpakistan.org




    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    USUrduDigitalOutreach - Home | Facebook

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  9. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    [​IMG]


    پاکستان کے وزیر ِتوانائی کا امریکی سفارتخانہ میں

    توانائی کے باکفایت استعمال کے اقدامات کا مشاہدہ


    امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے وفاقی وزیر ِتوانائی (پاور ڈویژن) اویس احمد خان لغاری کو امریکی سفارتخانہ میں توانائی کی بلا تعطل سپلائی کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات کے معائنہ کرانے کیلئے سفارتخانہ کے دورے کا اہتمام کیا۔ سفارتخانہ میں ۲۰۱۵ ء میں مکمل ہونے والی دفتری عمارت مقامی اور علاقائی سازوسامان، کھلی جگہ کو زیادہ سے زیادہ استعمال میں لانے اور باغبانی اور آبپاشی نظام میں دوبارہ کارآمد بنائے جانے والے پانی کے استعمال کی بدولت ایل اِی اِی ڈی سلور سرٹیفیکیشن حاصل کر چکی ہے۔


    وفاقی وزیر اویس لغاری نےباکفایت توانائی کے مختلف پہلو ؤں ،بشمول شمسی پینل، دھوپ سے بچانے والے شیڈز اور پانی کے ضیاع کو روکنے والی تکنیکی سہولیات کامشاہدہ کیا۔ سفارتخانہ اپنی حدود میں سرانجام دی جانے والی سرگرمیوں کیلئے بجلی اور پانی کےباکفایت استعمال کویقینی بنانے کیلئے جدید خودکار عمارتی نظام کوکنٹرول سینٹر کے طور پر استعمال کرتا ہے۔ وفاقی وزیر لغاری نے سفارتخانہ میں پانی اور بجلی کی کفایت کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات کو سراہتے ہوئے سفیر ہیل کی جانب سے پاکستانی طالبعلموں اور شہری منصوبہ سازوں کو ان اقدامات سے آگاہ کرنے کی حوصلہ افزائی کی۔



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    https://www.instagram.com/doturdu/

    Us Dot | Flickr
  10. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    241
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]


    [​IMG]


    امریکی سفارتخانہ کی جانب سے ایئر یونیورسٹی میں انگریزی زبان کےنئے پروگرام کا آغاز

    اسلا م آباد (۵ ِمئی ۲۰۱۸) __ انگریزی زبان کی مہارتیں روزگار کے بہتر مواقع اور حصولِ تعلیم کے امکانات کی طرف گامزن کرتی ہیں، اور اسلام آباد کے مضافات سے تعلق رکھنے والے ۱۰۰ نوجوانوں کو اب یہ موقعہ امریکی سفارتخانہ کی جانب سے ایئر یونیورسٹی میں شروع کیے گئے انگلش ایکسیس مائیکرو اسکالرشپ پروگرام کی توسط سے میسر آئے گا۔

    امریکی سفارتخانہ کے ڈپٹی چیف آف مشن جان ہوور نے نئے پروگرام کی افتتاحی تقریب کے موقع پر طالبعلموں کو مبارکباد پیش کی اور کہا کہ وہ اس موقع کو نئے خیالات کی تلاش اور ایک دوسرے سے سوالات پوچھنے کے لیے برو ئے کار لائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ طالبعلم ایک دوسرے سے مقابلہ کریں کہ کون زیادہ محنت کرتا ہےاور منفرد انداز میں سوچیں پھر وہ یہ دیکھ کر حیران رہ جائیں گے کہ انہوں نے کیا کچھ سیکھ لیا ہے اور انکے لیے کون سے نئے مواقع پیدا ہوئے ہیں۔

    جان ہوور نے ایئر یونیورسٹی کے تعاون کو بھی سراہا۔ انہوں نے کہا کہ امریکی سفارتخانہ کوایئر یونیورسٹی کے ساتھ اشتراک پر فخر ہےاور سفارتخانہ پاکستان کی قیادت کرنے کے لیے اگلی نسل تیار کرنے والے ایئر یونیورسٹی کے اقدامات کی حمایت کرتا ہے۔پاکستانی اور امریکی جامعات کی شراکت نے ہمارے اساتذہ اور طالبعلموں کے درمیان تعلیمی میدان میں تعاون کے جذبے میں نئی روح پھونکی ہے اور آج ہونہار طالبعلموں کی ایک اور کھیپ تیار دیکھ کر بہت اچھا محسوس ہو رہا ہے۔

    ایئر یونیورسٹی کی ڈین فیکلٹی آف ہیومنٹیز ڈاکٹر وسیمہ شہزاد اور وفاقی نظامت تعلیم کے ڈائریکٹر جنرل حسنات احمد قریشی نے بھی تقریب میں شرکت کی۔

    ایکسیس مائیکرو اسکالرشپ پروگرام پسماندہ کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کو اسکول کے بعد دو سالہ بھرپور نشستوں کے ذریعے انگریزی زبان کی مہارتیں سیکھنے کی بنیاد فراہم کرتا ہے۔ طالبعلم نہ فقط اپنی انگریزی کی مہارتوں میں اضافہ کرتے ہیں بلکہ قیادت اور پیشہ ورانہ صلاحیتیں بھی سیکھتے ہیں جو وہ پوری زندگی بروئے کار لاتے رہیں گے۔ ۲۰۰۴ء میں اس پروگرام کے آغاز سے اب تک۸۷ ممالک میں ۱۱۰،۰۰۰ سے زائد طالبعلموں نے انگلش ایکسیس پروگرام میں شرکت کی ہے۔ ۲۰۰۶ء سے اب تک، ۱۳،۰۰۰ سے زائد پاکستانی طالبعلموں نے ۲۰ سےزیادہ مقامات پر منعقد کیے گئے انگلش مائیکرواسکالرشپ ایکسس پروگرام میں شرکت کی ہے


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr

اس صفحے کی تشہیر