امریکہ ايک اور امريکی منصوبہ

fawad نے 'خبروں کی دنیا' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏11 ستمبر 2015

  1. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]



    امریکہ کے تجارتی نمائندے سفیر مائیکل فرومن کی جانب سے

    پاکستان کے ساتھ تجارت و سرمایہ کاری کے فروغ کے عزم کا اعادہ


    امریکہ کے تجارتی نمائندے سفیر مائیکل فرومن نے امریکہ ۔ پاکستان ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ فریم ورک ایگریمنٹ (ٹیفا) پر حکومت پاکستان کے ساتھ بات چیت کے لئے ۱۸ اکتوبر کو اسلام آباد میں ایک وفد کی قیادت کی۔ ٹیفا کونسل کے اجلاس میں جس کی میزبانی وفاقی وزیر تجارت خرم دستگیر خان کررہے تھے، پاکستانی مصنوعات کے لئے امریکہ میں مارکیٹ تک وسیع رسائی، لیبر اصلاحات میں تعاون، کاروباری سطح کے تعلقات اور حقوق املاک دانش سمیت تجارت و سرمایہ کاری سے متعلق اہم معاملات کا احاطہ کیا گیا۔


    امریکہ کے تجارتی نمائندے مائیکل فرومن نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ معاشی تعلقات کو امریکہ بہت زیادہ اہمیت دیتا ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان ایک مضبوط معاشی تعلق ہے جو ہزاروں افراد اور ان کے خاندانوں کی زندگی میں بہتری پر مبنی ہے۔ ہم نے کافی کامیابی حاصل ہے لیکن اب بھی بہت پیش رفت کی گنجائش باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ ہمارے تعلقات کے بہترین سال ہمارے سامنے ہیں اور ہم اپنے سامنے موجود بے شمار مواقع سے بھرپور طریقے سے مستفید ہونے کے لئے جدوجہد کررہے ہیں۔


    فریقین نے تجارت و سرمایہ کاری کو وسعت دینے سے متعلق جاری تعاون کو خصوصی طور پر اجاگر کیا۔ فریقین نے کہا کہ امریکہ۔ پاکستان کلین انرجی پارٹنرشپ کے تحت پاکستان میں کلین انرجی ڈیولپمنٹ کے نجی شعبے کے لئے تقریباً آٹھ کروڑ اسی لاکھ ڈالر کی فراہمی کے لئے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یو ایس ایڈ) اور پانچ پاکستانی بینکوں کےدرمیان پندرہ سالہ اشتراک کا ستمبر میں اجراء اس ضمن میں ایک اہم مثال ہے ۔ امریکی حکام نے کہا کہ پاکستان پرائیویٹ انویسٹمنٹ انیشیٹو (پی پی آئی آئی) اور تین انویسٹمنٹ فنڈز کے تحت پاکستان میں ابتدائی سرما یہ کاری اس سال کی جائے گی، پاکستان کے چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں میں کم از کم ۱۵ کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کے لئے نجی شعبے کے فنڈز کے ساتھ تینوں انویسٹمنٹ فنڈز نے یو ایس ایڈ کی فنڈنگ کے برابر حصہ ڈالا ہے۔ پی پی آئی آئی، توانائی کے نئے اقدام اور قرض تک رسائی کے لئے امریکہ۔پاکستان شراکت (چھ کروڑ ڈالر) کے تحت یو ایس ایڈ آئندہ برسوں کے دوران پاکستان میں تیس کروڑ ڈالر فنانسنگ تک رسائی کو یقینی بنائے گا۔ سفیر فرومن نےعالمی بینک کے ڈوئنگ بزنس انڈیکس پر پاکستان کی رینکنگ کو بہتر بنانے کی پاکستانی حکمت عملی میں تعاون کے عزم کا اظہار کیا۔


    سفیر فرومن نے ٹیفا کونسل میٹنگ۲۰۱۴کے تحت خواتین کو معاشی طور پر با اختیار بنانے اور وومن انٹرپنیورشپ کے یادداشتی مسودے پر مثبت تعاون کاذکر کیا۔ اسے جون میں ایک جامع منصوبے میں تحریر کیا گیا تھا جس میں امریکہ پاکستان وومن کونسل کی کوشش بھی شامل تھی۔


    ٹیفا میٹنگ کے علاوہ سفیر فرومن نے پاکستانی آفیشلز کے ساتھ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور پر گفتگو کی۔ ان ملاقا توں کے دوران سفیر فرومن نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ پاکستانی حکومت اور نجی شعبے کے ساتھ مل کر باہمی تجارت اور سرمایہ کاری میں بہتری کے لیے پر عزم ہے۔


    امریکہ پاکستانی برآمدات کی سب سے بڑ ی منڈی اور پاکستان میں براہ راست سرمایہ کاری کا ایک بنیادی ذریعہ ہے۔ ۲۰۱۵ء میں پاکستان اور امریکہ کے درمیان باہمی تجارت پانچ اعشاریہ پانچ ارب ڈالر سے تجاوز کر گئی ۔


    امریکہ پاکستان ٹیفا دونوں ملکوں کے درمیان تجارت اور سرما یہ کاری کے لیے گفت و شنید کے اصول اور سٹرا ٹیجک ڈھانچہ فراہم کر تا ہے۔ ٹیفا کے متعلق مزید جاننے کے لیے وزٹ کریں

    MAX - Unsupported Browser Warning


    پاکستان اور امریکہ کے درمیان مظبوط معاشی شراکت سے متعلق حقائق نامہ درج ذیل لنک پر موجود ہے۔

    The United States and Pakistan - Strong and Enduring Economic Partnership



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos
  2. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
  3. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    پاکستان کی سیکورٹی مضبوط بنانے کے لیے سرحدی چوکیوں کی تعمیر کے منصوبے کا افتتاح


    اسلام آباد (۱۲ ِمئی ، ۲۰۱۷ ء)__ جنرل ہیڈ کوارٹر ز راولپنڈی میں ڈی آئی جی ایف سی خیبر پختونخواہ بریگیڈیر محمد یو سف ماجوکا اورشعبہ انسدادِمنشیات ونفاذِقانون (انٹرنیشنل نارکوٹکس اینڈ لاء انفورسمنٹ افئیرز) کی ڈائر یکٹر کیٹی اسٹا نا نے سرحدی چو کیوں کی تعمیر کے منصوبے کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر ڈی آئی جی ایف سی خیبر پختونخواہ نے شعبہ انسدادِمنشیات ونفاذِقانون کے تعاون کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ امریکی سفارتخانہ کا انٹرنیشنل نارکوٹکس اینڈ لاء انفورسمنٹ افئیرز ایک عشرے سے زیادہ عرصہ سے ایف سی کے ساتھ کھڑا ہےاور پاکستان کی مغربی سرحد پر قانون نافذ کرنے والےاداروں اور عام شہریوں کےجانی نقصانات ، سرحد پاردراندازی ، اسمگلنگ اور منشیات ،اغواء برائے تاوان اور دیگرجرائم کو کم کرنے میں اعانت فراہم کر رہا ہے۔

    یہ تقریب ۲۰۱۴ء میں شروع ہونے والے ایک کروڑ ڈالر لاگت کے تین سالہ منصوبے کے مکمل ہونے کی خوشی میں منعقد کی گئی جس میں پانچ کمپنی ہیڈ کوارٹرز ، تینتیس سرحدی چوکیوں کی تعمیر ، ۵۴حفاظتی چوکیوں کی تزئین و آرائش شامل تھی ۔ قبل ازیں ۵۵ لاکھ ڈالر کی لاگت سے ۵۴ سرحدی چوکیوں کی تعمیر جبکہ تیس تنصیبات کی تزئین و آرائش کی گئی۔

    تقریب میں انٹرنیشنل نارکوٹکس اینڈ لاء انفورسمنٹ افئیرز اسلام آباد کی سربراہ کیٹی سٹانا نے پاکستان کی افغانستان کے ساتھ سرحد پر فر نٹیر کور کی بطور اولین دفاعی لائن کردارکی تعریف کی اور اس کے ساتھ تعاون کو قابل فخر قرار دیا ۔ کیٹی اسٹانا نے خاص طور پر شعبہ انسدادِمنشیات ونفاذِقانون کے تعاون سے چترال ، مہمند اور باجوڑ ایجنسی میں قائم سرحدی چوکیوں کا ذکر کیا جن سے ۲۰۱۴ ء سے ۲۰۱۶ء کے دوران کئی حملوں میں انسداد منشیات اور سرحد پار در اندازی روکنے میں مصروف عمل ایف سی اہلکاروں کی قیمتی جانوں کو محفوظ بنانے میں مدد ملی۔

    شعبہ انسدادِمنشیات ونفاذِقانون انفراسٹرکچر کے ساتھ ساتھ رواں سال انسداد منشیات اہلکاروں کے تحفظ اور فاٹا اور پاک افغا ن سرحد پر ایف سی کی موجودگی بہتر بنانے کے لیے بلٹ پروف جیکٹس ، ہیلمٹ اور بم ڈسپوزل سوٹ کی فراہمی سمیت سازو سامان کی شکل میں پچاس لاکھ ڈالر مہیا کرے گا۔


    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  4. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ



    امریکہ کی جانب سے پاکستان میں صحت کے بہتر نظام کیلئے مزید سرمایہ کاری

    امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یوایس ایڈ) کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک، وزارت قومی صحت کے سیکرٹری ایوب شیخ، ہیلتھ سروسز اکیڈمی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر اسد حفیظ اور شعبہ صحت حکومت سندھ ڈاکٹر فضل اللہ پیچوہو نے حکومت امریکہ کی جانب سے پاکستانی عوام کو طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے مختص بجٹ میں اعانت کیلئے نئے منصوبے شروع کرنے کی غرض سے تین لیٹرز آف کمٹمنٹ پر دستخط کئے۔

    یو ایس ایڈ اور وزارت برائے نیشنل ہیلتھ سروسز ریگولیشن اینڈ کوآرڈینیشن کے درمیان طے پانے والے پہلے لیٹر آف کمٹمنٹ کا مقصد صوبے میں صحت وآبادی کے شعبے میں منصوبہ بندی اور اصلاح کو فروغ دینا، صحت سے متعلق سرکاری شعبہ کی مالی استعداد بڑھانا،محفوظ زچگی کے شعبے میں سرمایہ کاری اور صحت کے شعبہ میں افرادی قوت ، بالخصوص ماہر دائیوں اور لیڈی ہیلتھ ورکرز، کو تیارکرناہے۔

    یو ایس ایڈ اور وزارت صحت حکومت سندھ کے درمیان دستخط کئے جانے والے دوسرے لیٹر آف کمٹمنٹ کا تعلق عوام کی صحت کے حوالے سے منصوبہ بندی میں معلومات فراہم کرنے کیلئے اعدادوشمارکے استعمال میں بہتری لانا ہے۔ امریکی اعانت سے اس محکمے کو صوبے بھر میں نگرانی کی صلاحیتوں کو مؤثربنانے اور ڈائریکٹر جنرل صحت سندھ کے نگرانی اور جائزے کےشعبے کو ترقی دینے میں مدد ملے گی۔

    یوایس ایڈ اور ہیلتھ سروسز اکیڈمی کےمابین طے پانے والے تیسرے لیٹر آف کمٹمنٹ کے ذریعے اساتذہ کی ترقی ، مطلوبہ تحقیق، سابق طالب علموں کے نیٹ ورک کو مضبوط بنانے، بین الاقوامی ادارہ جاتی روابط کو فروغ دینے اور فاصلاتی تعلیم کے پروگرام وضع کرنے میں مدد ملے گی۔

    مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے پاکستان کے شعبہ صحت کے حوالے سے امریکہ کے دیر پا عزم کو اجاگر کیا۔ انھوں نے کہا کہ امریکی حکومت سمجھتی ہے کہ پاکستانی عوام پر سرمایہ کاری کرنااور ہر سطح پر ضروری خدمات کی فراہمی کیلئے حکومت پاکستان کی استعداد کو بہتر بنانا انسانی زندگیوں کو بچانے اور صحت کے حوالے سے بہتر نتائج حصول کے دو لازمی اجزاء ہیں۔

    وزارت قومی صحت کے سیکرٹری ایوب شیخ نے صحت کے شعبے میں حکومتوں کی سطح پر نئے پروگرام شروع کرنے اور تزویراتی سرمایہ کاری پر توجہ مرکوز کرنے پر، جس سے قومی صحت پالیسی، خدمات، مالیات اور نگرانی میں بہتری آئے گی ، امریکہ کا شکریہ ادا کیا۔

    فوٹو دیکھنے کیلئے درجہ ذیل پیج ملاحظہ کیجئے۔

    U.S. Embassy’s Flickr page.

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  5. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    امریکی سفارتخانہ کی جانب سے اسلام آباد پولیس اور پاکستان نیشنل پولیس بیورو کیلئے

    نفاذ قانون سے متعلق سازو سامان اور گاڑیوں کا عطیہ


    پاکستان پولیس کے اعلیٰ حکام نے اسلام آباد پولیس لائن ہیڈ کوارٹر میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران نفاذ قانون اور انسداد دہشت گردی سے متعلق آلات وصول کئے۔دئیے گئے سازو سامان میں گاڑیاں، مواصلات کے آلات، یونیفارم اور کرائس ریسپانس ٹیم کا سازوسامان شامل ہے جس کی کل مالیت ایک ملین ڈالر سے زائد ہے۔تقریب کے مہمان خصوصی ڈپٹی انسپکٹر جنرل اسلام آباد پولیس اشرف زبیر صدیقی تھے جب کہ امریکی سفارتخانہ کی نمائندگی ڈپٹی ریجنل سیکیورٹی آفیسر راب میئر نے کی۔

    یہ عطیات امریکی وزارت خارجہ کے انسداد دہشت گردی معاونت (اے ٹی اے) پروگرام کے زیر اہتمام فراہم کئے گئے۔اے ٹی اے پروگرام کے تحت دنیا بھر میں قانون نافذ کرنے والے افراد کو تربیت اور سازو سامان فراہم کیا جاتا ہے۔ اس پروگرام کے تحت۲۰۰۳ سے وفاقی اور صوبائی سطح پر پاکستانی قانون نافذ کرنے والے اداروں کو انسداد دہشت گردی کی صلاحیتیں نکھارنےاورپاکستان بھر سے تین ہزار سے زائد افسران کی تربیت فراہم کرنے کے علاوہ اس پروگرام کے آغاز سے اب تک لگ بھگ تین اعشاریہ تین ملین ڈالر کا سازو سامان مہیا کیا جا چکا ہے۔

    اس تقریب سے متعلق تصویریں آپ مندرجہ ذیل ویب سائٹ سے حاصل کر سکتے ہیں۔

    U.S. Embassy Flickr page.



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  6. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکی سفارتخانے کے ناظم الامور کی تبادلہ پروگرام میں شرکت کرنےوالےپاکستانی طالبعلموں کومبارکباد


    امریکی حکومت کی اعانت سےجاری کینیڈی لوگر یوتھ ایکسچنج اینڈ اسٹڈی پروگرام (یس) کےسابق طالب علموں نے رواں برس یس پروگرام کےتحت امریکہ جانے والے ۷۵ طالب علموں کے ساتھ وہاں اپنے قیام اورامریکی اسکولوں اور ثقافت کےحوالے سے اپنے تجربات بیان کئے ۔ یہ طالب علم ایک سالہ دورانیے کے یس تعلیمی تبادلہ پروگرام میں شرکت کے لیے عنقریب امریکہ روانہ ہوں گے۔



    امریکی سفارتخانے کے ناظم الامور جوناتھن پریٹ نےاس پروگرام کے سابق اور امسال امریکہ جانے والے طالب علموں کے اعزاز میں اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب سےخطاب کرتے ہوئے تبادلہ پروگرام کے شرکاء کوان کی تعلیمی کامیابیوں پرمبارکباد دی ۔


    امریکی سفارتخانے کے ناظم الامور نے کہا کہ امریکہ میں غیرملکی طالب علموں کو خوش آ مدید کہناپرانی روایت ہے کیونکہ وہ ہمارے ملک اوروہاں کی درسگاہوں میں تنوع لاتے ہیں۔ امریکی سفارتخانہ مختلف تعلیمی اور پیشہ وارانہ پروگراموں کے تحت ہر سال ایک ہزار کے لگ بھگ پاکستانی طالب علموں کو مختلف امریکی جامعات میں تعلیم کے حصول کیلئے اعانت فراہم کرتا ہے۔


    آئی ای اے آر این کے زیراہتمام ۲۰۰۴ء سےلے کر اب تک ۹۰۰سے زائد پاکستانی طالب علم یوتھ ایکسچنج اینڈ اسٹڈی پروگرام (یس) میں شرکت کر چکے ہیں ۔

    آئی ای اے آر این کی کنٹری ڈائریکٹر فرح کمال نے کہا کہ یس پروگرام کے تحت نوجوان پاکستانی طالب علم قائدانہ صلاحیتوں ، سماجی خدمات کی لگن اورتنقیدی فکر جیسی مہارتوں کی تربیت حاصل کرتے ہیں جومستقبل میں ان کیلئے اور ان کی قوم کیلئے فائدہ مند ثابت ہونگی۔


    دوبارہ داخلے کےسیمیناراورروانگی سے قبل تعارفی تقریب کے دوران ۲۰۱۶ء کے یس پروگرام کے سابق طالب علموں نے ۲۰۱۷ء کے یس پروگرام کےشرکاء سےامریکہ میں اپنےقیام کےتجربات بیان کیےاورطلباء پر زوردیا کہ وہ اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے امریکہ میں سماجی خدمات اورغیر نصابی سرگرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔


    یوتھ ایکسچنج اینڈ اسٹڈی پروگرام(یس) کی سابقہ شریک درنایاب نے کہا کہ مجھے پروگرام میں شرکت کے بعد بہت اعتماد ملا۔ انہوں نے کہا کہ پروگرام میں شرکت سے قبل میں اتنی پر اعتماد نہیں تھی مگر ابھی میرا اعتماد بہت بڑھا ہے۔ میں اس تبدیلی جس کا ذکر ہمیشہ کیا جاتا ہے کیلئے مکمل طور پر تیار ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں معاشرے میں مثبت تبدیلی لا سکتی ہوں جسکا سہرا یوتھ ایکسچنج اینڈ اسٹڈی پروگرام(یس) کو جاتا ہے۔


    تبادلہ پروگرام اور پاکستان میں امریکی سفارتخانہ کی سرگرمیوں کے بارے میں مزیدمعلومات کیلئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں:


    http://pk.usembassy.gov.

    ###



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  7. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ



    امریکی تعاون سے تعمیرکردہ فرنٹیئر کانسٹیبلری کی نئی عمارت کا افتتاح


    امریکی سفارتخانے کے شعبہ انٹرنیشنل نارکوٹکس اینڈ لاء انفورسمنٹ افئیرز (آئی این ایل) کے ڈپٹی ڈائر یکٹر مائیک مک کیون نے آئی این ایل کے تعاون سے مکمل ہونیوالے فرنٹیئر کانسٹیبلری کے سپنہ تھانہ کمپاؤنڈ کی عمارت کے افتتاح کے حوالے سے ایک تقریب میں شرکت کی جس کا اہتمام خیبر پختونخواہ ہاؤس اسلام آباد میں کیا گیا۔ اس موقع پر آئی این ایل کے جانب سے سے فرنٹیئر کانسٹیبلری کے لئے وردیاں اور زرہ بکتر بھی فراہم کی گئیں۔


    دو اعشاریہ چھ ملین ڈالر سے زائد لاگت سے تعمیرشدہ سپنہ تھانہ کمپاؤنڈ میں۹۰۰ ایف سی اہلکاروں کے لیے دفاتر، رہائشی عمارت، بیرکس، میس ہالز، سنتری پوسٹس، اور چوکیوں کی تعمیر شامل ہے ۔ تقریب کے دوران آئی این ایل کے تعاون سے حال میں ایف سی کو مہیا کی گئی تین ملین ڈالر مالیت کی پندرہ سو حفاظتی جیکٹس اور ہیلمٹ، تیس ہزار وردیاں، پندرہ سو جوتے اور پندرہ ہزاربیلٹس کو بھی سراہا گیا۔


    ڈپٹی ڈائریکٹر مائیک مک کیون نے حکومتی عملداری اور سیکورٹی کی فراہمی میں اضافے کے لیے ایف سی کے کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کہ سپنہ تھانے کی نو تعمیر شدہ عمارت کوہاٹ، پشاور اور خیبر ایجنسی کے سنگم پر واقع ہے اور یہ آئی این ایل کے تعاون سے دسمبر ۲۰۱۵ء اور مارچ ۲۰۱۶ء میں ایک اعشاریہ نو اور ایک اعشاریہ سات ملین امریکی ڈالر لاگت سے تعمیر ایف سی اور لیوی کمپاؤنڈ کے ساتھ واقع ہے۔


    کمانڈنٹ لیاقت علی خان نے اپنے خطاب میں امریکی حکومت اور آئی این یل کی اعانت اور موثر تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ایف سی اور آئی این ایل کے درمیان تعاون جاری رہے گا۔


    ۲۰۱۷ء میں اب تک مہیا کی گئی تین ملین امریکی ڈالر کی اعانت کے علاوہ رواں برس امریکی سفارتخانے کا شعبہ آئی این ایل فرنٹیئر کانسٹیبلری کے اہلکاروں کی حفاظت اور فاٹا میں آپریشنل صلاحیتوں میں اضافے کے لیے ایک اعشاریہ پچتھر ملین امریکی ڈالر قیمت کے آرمرڈ پرسنل کیر ئیر بھی مہیا کر یگا۔



    آئی این ایل نوّے سے زائد مما لک میں جرائم، کرپشن، منشیات سے منسلک جرائم کے خاتمے، پولیس کے اداروں کی بہتری، اور ایک شفاف اور جوابدہ نظام کے لیے قوانین اور عدالتی نظام کی بہتری کے لیے اعانت فراہم کرتا ہے۔


    آئی این ایل سے متعلق مزید جاننے کے لیے ملاحظہ کیجئے:


    Bureau of International Narcotics and Law Enforcement Affairs (INL)




    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  8. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    [​IMG]



    یوایس ایڈ کی جانب سے آم کے پاکستانی برآمدکنندگان کو عالمی مسابقت کیلئے اعانت

    یوایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جیری بسن اور چیئرمین پاکستان زرعی ریسرچ کونسل (پی اے آر سی) ڈاکٹر یوسف ظفرنے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (یوایس ایڈ) میں ۲۴ جولائی کو منعقدہ "مینگو گالا" کے موقع پر ۱۳ کاشتکاروں کو آم کی درجہ بندی کرنے کے لیے ساڑھے سات لاکھ ڈالر مالیت کے مینگو گریڈرزحاصل کرنے کی راہ ہموار کی جس سے پاکستان میں آم کی پیداوار اور برآمد میں نمایاں اضافہ ہوگا۔

    نیپال کی سفیر سیوا لمسال ادھیکاری نے بھی آم کے پاکستانی شعبے کے بارے میں مزید جاننے کیلئے اسلا م آباد کے مقامی ہوٹل میں منعقد ہ اس تقریب میں شرکت کی ۔

    "مینگو گالا" کا انعقاد آم کے پاکستانی شعبے کے حوالے سے امریکہ کی وابستگی کی غمازی کرتا ہے۔ یہ تقریب سرکاری اور نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے متعلقہ فریقوں کو قریب لانے میں معاون ثابت ہو ا تاکہ آم کی برآمد کے حوالے سے رجحانات اور نئے مواقع پر بات چیت کی جاسکے۔ صف اول کے کاشتکاروں اور برآمد کنندگان نے پاکستان میں پیدا ہونے والے آموں کی متعدد اقسام کی نمائش کی۔

    یوایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جیری بسن نے کہا کہ حکومت ِامریکہ یوایس ایڈ کی وساطت سےبین الاقوامی معیار اور برآمدی ضوابط کی تعمیل کو یقینی بناتے ہوئے آم کے پاکستانی کاشتکاروں کی نئی منڈیوں تک رسائی کو فروغ دینے کیلئے پُرعزم ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم بین الاقوامی منڈیوں میں پاکستانی آم کو زیادہ سے زیادہ مسابقت کے قابل بنانا چاہتے ہیں۔

    انھوں نے مزید کہا کہ ہم پُر اعتماد ہیں کہ ہماری شراکت داری سے بنیادی ڈھانچے کی ترقی ، جدید ٹیکنالوجی اور منڈیوں میں مواقع کے ذریعے آم کی برآمد بڑھے گی ، جس سے پاکستانی کاشتکاروں اور برآمد کنندگان کی آمدن میں اضافہ ہوگا۔

    چیئرمین پاکستان زرعی ریسرچ کونسل (پی اے آر سی) ڈاکٹر یوسف ظفر نےبھی پاکستان کی زرعی صنعت کے اس شعبےکیلئےامریکہ کی جانب سےفراخدلانہ اعانت فراہم کرنے کو سراہا۔

    یوایس ایڈ نے عالمی اور قومی منڈیوں میں تجارتی پیمانے پر پاکستان کی زراعت اور لائیواسٹاک کے شعبوں کی چاراشیاء گوشت، قیمتی اور بے موسمی سبزیوں، آموں اور سنگترے کی مسابقتی صلاحیت کو بڑھانے کی غرض سے ۲۰۱۵ء میں یوایس –پاکستان پارٹنرشپ فار ایگریکلچرل مارکیٹ ڈیویلپمنٹ کا آغاز کیا۔ یہ شراکت داری ترقی اور سرمایہ کاری کیلئے عمل انگیز کا کردار ادا کررہی ہے اور پاکستان کی زرعی اجناس کے کا شتکاروں، انھیں مصنوعات کی شکل دینے والوں، برآمدکنندگان اور صارفین کے درمیان تعاون کو فروغ دے رہی ہے۔

    یوایس ایڈ نے گرانٹ کے حوالے سےاس منصوبے کے تحت جاری پروگرام کےذریعے۱۳جدیداور خودکار مینگو گریڈر فراہم کئے ہیں۔یہ گریڈر اِمسال پہلی بار برآمد کی غرض سے آموں کی درجہ بندی کرنے کیلئے استعمال کئے جارہے ہیں۔

    یوایس ایڈ نے ۲۰۰۹ء سے لے کر اب تک آم کے کاشتکاروں کو اس پھل کو پراسیس کرنے اور برآمدی پیمانے پر پورا اترنے کیلئے اعانت فراہم کی ہے۔ان ابتدائی کوششوں کو مزیدآگے بڑھاتے ہوئے یو ایس ایڈ آم کی برآمد کو توسیع دینے پر توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے۔ یوایس ایڈ پاکستانی حکومت اور نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے کاشتکاروں کے ساتھ مل کر آم کی فروخت بڑھانے کیلئے بھی کام کررہی ہے۔

    پاکستان میں یوایس ایڈ کے پروگراموں کے بارے میں مزید معلومات کیلئے درج ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں:

    www.usaid.gov/pakistan/economic-growth-agriculture.

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr
  9. fawad

    fawad امریکی نمائندہ

    مراسلے:
    118
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ


    امریکہ اور عورت فاؤنڈیشن کی جانب سےصنفی مساوات کے پروگرام کی کامیابیوں کے حوالے سے تقریب

    امریکہ اور عورت فاؤنڈیشن نے پاکستان میں صنفی مساوات کو فروغ دینے کے سلسلے میں اپنی کامیابیوں کے سات سال مکمل ہونے کے موقع پر پروگرام برائے صنفی مساوات(جی ای پی) کی اختتامی تقریب منعقد کی ۔

    جی ای پی، جسے حکومت امریکہ نے امریکی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی کی وساطت سے عملی جامہ پہنایا،۷۰ سال قبل قیام پاکستان سے لے کر اب تک اپنی نوعیت کا سب سے بڑا پروگرام تھا۔

    قائم مقام نائب امریکی سفیر کرسٹینا ٹوملنسن نے اِس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے خواتین کی انصاف تک رسائی بڑھانے اور ان کے حقوق اور مواقع میں اضافہ کے ذریعہ ان کو بااختیا ربنانے، صنفی بنیاد پر تشدد میں کمی اور صنفی مساوات کی وکالت کیلئے پاکستانی تنظیموں کی استعداد ِکارکو بہتربنانے ایسے اقدامات کے لیے جانفشانی کا مظاہرہ کرنے پر جی ای پی کے شرکاء کو مبارکباد دی۔

    کرسٹینا ٹوملنسن نے کہا کہ معاشروں کی ترقی کیلئے عورتوں اور لڑکیوں کو تعلیم ،صحت عامہ اور ٹیکنالوجی تک رسائی کے مواقع میسر ہونے چاہیئں، انھیں وسائل، زمین اور منڈیوں تک رسائی حاصل ہو اور انھیں رہنمائی کرنے، امن وآشتی کے فروغ اور روزی کمانے کے قابل بنانے کیلئے مساوی حقوق اور مواقع فراہم کئے جائیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ صنفی مساوات اور عورتوں کوبااختیا ر بنانا محض ترقی کے عمل کا حصہ ہی نہیں ، بلکہ ترقی کے عمل کا مرکزومحور ہو۔ عالمی سطح پر عورتوں اور لڑکیوں کے مرتبہ میں اضافہ نہ صرف یہ کہ درست ،بلکہ قابل ستائش کام ہے۔

    عورت فاؤنڈیشن کے قائم مقام ایگزیکٹو نعیم مرزا نے پروگرام کی کامیابیوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ سرکاری اداروں ، سرکاری جامعات، بارکونسلوں اور جوڈیشل اکیڈیمیوں میں صنفی مسائل کے حوالے سے پروگرام متعارف کروا نے سے ملک بھر کے اداروں اور پاکستانی عورتوں کی زندگیوں میں تبدیلی آئی ہے۔ اس پروگرام میں صنفی مساوات کے فروغ کے ذریعہ سرکاری اور غیرسرکاری اداروں کی استعداد بڑھانے پر بھی خصوصی توجہ دی گئی۔ نعیم مرزا نے پاکستان میں صنفی مساوات کےفروغ کیلئے مسلسل اعانت فراہم کرنے پر حکومت امریکہ کا شکریہ بھی ادا کیا۔

    تقریب میں اس پروگرام سے مستفید ہونے والوں کو اپنے کام کے بارے میں آگہی فراہم کرنے کا موقع بھی ملا، جس میں فاروق قیصر نے "انکل سرگم "کے روپ میں اس پروگرام کی کامیابیوں اور ملک میں عورتوں کو درپیش مسائل کو اُجاگرکیا۔

    حکومت امریکہ ،پاکستانی حکومت کےاشتراک سے ان پروگراموں کےذریعے صنفی بنیاد پر ہونے والے تشدد کے تدارک ، خواتین کی کاروباری سرگرمیوں کو فروغ دینے اور اُنھیں بااختیار بنانے، سیاسی عمل میں اُن کی شرکت اورانھیں معیاری تعلیم اور صحت کی سہولتوں تک رسائی کیلئے اعانت فراہم کرتی ہے۔

    صنفی پروگرام کے بارے میں مزیدجاننے کیلئے مندرجہ ذیل ویب سائٹ ملاحظہ کریں:


    Gender Equity Program | U.S. Agency for International Development



    ###



    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    https://twitter.com/USDOSDOT_Urdu

    Security Check Required

    Digital Outreach Team (@doturdu) • Instagram photos and videos

    Us Dot | Flickr

اس صفحے کی تشہیر