محمد اجمل خان
آخری سرگرمی:
‏28 اگست 2017
رکنیت:
‏8 مارچ 2017
مراسلے:
61
نمبرات:
8
محصول مثبت درجہ بندیاں:
6
محصول نیوٹرل درجہ بندیاں:
2
محصول منفی درجہ بندیاں:
0

مراسلہ ریٹنگ

Received: Given:
شکریہ 2 0
پسند 5 1
ناپسند 0 0
متفق 0 1
غیرمتفق 0 0
زبردست 1 0
معلوماتی 0 0
علمی 0 0
مفید 0 0
غیر متعلق 0 0
جنس:
مذکر
یوم پیدائش:
‏5 اکتوبر 1965 (عمر: 52)
مقام سکونت:
ریاض‘ سعودی عرب
پیشہ:
سول انجنئیر

اس صفحے کی تشہیر

محمد اجمل خان

رکن, مذکر, 52, از ریاض‘ سعودی عرب

پھول کو مسلنا آسان ہے لیکن اس کے پھیلائے ہوئے خوشبووں کو ختم کرنا ناممکن ہے۔ہمیں ایسا ہی ہونا چاہئے کہ ہمارا کام باقی رہے۔ ‏27 مارچ 2017

محمد اجمل خان کو آخری دفعہ پایا گیا:
‏28 اگست 2017
    1. محمد اجمل خان
      محمد اجمل خان
      پھول کو مسلنا آسان ہے لیکن اس کے پھیلائے ہوئے خوشبووں کو ختم کرنا ناممکن ہے۔ہمیں ایسا ہی ہونا چاہئے کہ ہمارا کام باقی رہے۔
      1. سلیمان نے اسے پسند کیا۔
    2. محمد اجمل خان
      محمد اجمل خان
      کاش میرا علم میرے تخیل کا ساتھ دینا۔
      1. سلیمان نے اسے پسند کیا۔
    3. محمد اجمل خان
      محمد اجمل خان
      اللہ کا یہ بندہ اللہ اور اللہ کے رسول ﷺ کی محبت میں اللہ اور اللہ کے رسول ﷺ کی باتوں کو سیکھنا‘ سمجھنا اورعمل کرنا چاہتا ہے۔
  • لوڈ ہو رہا ہے...
  • تعارف

    جنس:
    مذکر
    یوم پیدائش:
    ‏5 اکتوبر 1965 (عمر: 52)
    مقام سکونت:
    ریاض‘ سعودی عرب
    پیشہ:
    سول انجنئیر
    اللہ کا یہ بندہ اللہ اور اللہ کے رسول ﷺ کی محبت میں اللہ اور اللہ کے رسول ﷺ کی باتوں کو اللہ کے رسول ﷺ کے بتائے ہوئے طریقے کے مطابق سیکھنا‘ سمجھنا‘ عمل کرنا اور اللہ کے بندوں تک پہچانا چاہتا ہے۔
    اللہ کے اس بندے کو’ محمد اجمل خانکہتے ہیں لیکن آپ شارٹ کٹ میں صرف ’ اجمل‘ پکار سکتے ہیں کیونکہ کراچی میں لوگ اسی نام سے پکارتے ہیں۔
    یہ بندہ سڑکیں ڈیزائن کرتا ہےاورکوشش کرتا ہے کہ سڑکیں شارٹ کٹ اور سیدھی ہوں لیکن کہیں خم بھی دے دیتا ہے تو کہیں چوراہے بنا دیتا ہے تاکہ لوگ سوچیں کہ جانا کدھر ہے:
    جو مومن بندے ہیں وہ صراط مستقیم کی طرف جانے کی سعی کرتے ہیں
    اور
    اللہ کے اس بندے کی سعی بھی یہی ہے‘ جس کیلئے دین کا علم ضروری ہے
    لیکن
    اس بندے کی دینی تعلیم واجبی سی ہے
    اور
    اردوتو کسی درس گاہ میں پڑھا ہی نہیں
    لیکن
    بچپن سے ہی اردو سےشغف ہے۔
    اور
    اِسی شغف نے ’شغف‘ کی ہی تخلص سے بچپن میں شاعری کی طرف مائل کیا لیکن ناکام رہا۔
    اور
    اب پچپن کے قریب میں آکر قریب چار سال پہلے کچھ لکھنے کا شوق پیدا ہوا۔
    جو کچھ لکھا پہلے القلم (www.alqlm.org) کی نذر کیا جو کہ ضائع ہو گیا کیونکہ 2015 میں القلم کے عتاب میں آنےکے بعد القلم انتظامیہ نے میری تحاریر کو retrieve نہیں کیا۔پھر مختلف فورم کا رخ کیااور یونہی چلتے چلتے اب
    صراط الہدیتک آپہنچا ہے۔​
    نہ جانے یہ سفرکیسا رہے گا؟